فیاض الحسن چوہان کے بیٹے کے نمبر کیسے بڑھے؟ 

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

تحریک انصاف کے صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان کے بیٹے کے پریکٹیکل میں نمبر بڑھنے سے متعلق ہیڈ ایگزمنر کا موقف سامنے آ گیا ہے۔ گزشتہ روز فیاض الحسن چوہان کے بیٹے فہد حسن کے ایف ایس سی کے پریکٹیکل میں نمبر بڑھانے کا انکشاف سامنے آیا تھا جس پر کنٹرولر امتحانات نے فہد حسن کا امتحانی نتائج روکتے ہوئے انکوائری کا حکم دے دیا تھا۔

ذرائع کے مطابق فہد حسن کے پریکٹیکل میں نمبر بڑھنے کے حوالے سے ایف ایس سی فزکس کا پریکٹیکل لینے والے ہیڈ ایگزیمنر اور سب ایگزیمنر کے بیانات ریکارڈ کر لیے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق رزلٹ شیٹ پر نمبروں کے ردوبدل کی جگہ پر دونوں ایگزیمنر کے دستخط موجود ہیں۔

ہیڈ ایگزیمنر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ میں نے خود 14 نمبروں کو بڑھا کر 30 کیا اور دستخط بھی کیے جب کہ سب ایگزیمنر کے مطابق انہوں نے پریکٹیکل کے 14 سے 30 نمبروں کی تبدیلی سے اتفاق کرتے ہوئے دستخط کیے۔

ذرائع راولپنڈی بورڈ کا کہنا ہے کہ انکوائری کمیٹی کی سربراہی غلام محمد جھکڑ کر رہے ہیں۔ انکوائری کمیٹی 2 روز میں سیکریسی ڈپارٹمنٹ سے اصل تصدیق شدہ مارک شیٹ منگوائے گی اور پرچے میں نمبرز کے رد و بدل کے معاملے کی بھی تحقیقات ہوں گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ فیاض الحسن چوہان نے معاملے کی انکوائری کرنے کی درخواست چیئرمین بورڈ کو از خود ارسال کی ہے۔

چیئرمین راولپنڈی بورڈ غلام دستگیر کا کہنا ہے کہ ہیڈ ایگزیمنر کے پاس پانچ فیصد سے زائد نمبر کی تبدیلی کا اختیار نہیں۔ تحقیقات میں یہ جاننا ضروری ہے کہ ایگزیمنر نے نمبروں کی تبدیلی خود کی یا کسی کے دباؤ میں آ کر کی۔ تحقیقات میں جو بھی ذمہ دار قرار پایا اس کے خلاف سخت کارروائی کریں گے۔

خیال رہے کہ فیاض الحسن کے بیٹے فہد حسن نے بارہویں جماعت کے امتحان میں 769 نمبر حاصل کیے ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •