49 سالہ شازیہ خشک نے دین اسلام کے لیے گلوکاری کو ہمیشہ کے لیے خیر باد کہہ دیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

عالمی شہرت یافتہ گلوکارہ شازیہ خشک نے گلوکاری کو ہمیشہ ہمیشہ کے لیے خیر باد کہہ دیا اور کہا ہے کہ میں نے یہ فیصلہ بہت سوچ سمجھ کر کیا ہے۔

گلوکارہ شازیہ خشک کا کہنا ہے کہ اس بات کا مصمم ارادہ کرلیا ہے کہ نہ صرف اپنی آئندہ زندگی اسلامی تعلیمات کے عین مطابق گزاروں گی بلکہ عملی طور پر اپنی زندگی دین اسلام کے کاموں کے لیے وقف کر رہی ہوں۔ شوبز کو چھوڑنے کا فیصلہ بہت سوچ سمجھ کر کیا جس میں واپس آنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔

شازیہ خشک کا کہنا تھا کہ بیرون ممالک سے پرفارمنس کے لیے مسلسل دعوتیں مل رہی ہیں جو شکریہ کے ساتھ منع کر دیں لیکن میں مداحوں کی تہہ دل سے شکر گزار ہوں جنھوں نے 25 برس میرے گیتوں کو پسند کیا۔ مداحوں سے امید کرتی ہوں کہ اس اقدام پر وہ میرا بھرپور ساتھ دیں گے۔

واضح رہے کہ فروری 2018 میں شازیہ خشک کا کراچی کے علاقے ریڈ زون میں اپنے بااثر ہمسائے سے جھگڑا ہو گیا تھا۔ مبینہ طور پر شازیہ خشک کا ہمسایہ ان کے گھر کے کچھ حصے پر قبضہ کرنا چاہتا تھا۔ شازیہ خشک نے اس واقعے کی پولیس رپورٹ درج کروانے کی کوشش بھی کی لیکن ہمسائے کے سیاسی اثر و رسوخ کی وجہ سے ناکام رہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •