جوکر – فلم ریویو

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  


کبھی یوں بھی ہوتا ہے، کہ معاشرہ ایسے انسان کو سمجھنے سے قاصر رہتا ہے، جو بظاہر کسی بیماری میں مبتلا ہے، مگر اس کے اندر احساسات، محسوسات کا وہی جوار بھاٹا ہوتا ہے، جو کسی نارمل انسان میں۔ ٹوڈ فلپس کی لکھی اور ڈائریکٹ کی گئی اس فلم ’’جوکر‘‘ نے پوری دنیا کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے۔ گلیڈی ایٹر کے لیے آسکر نام زد جیکوئن فینیکس نے اس فلم میں ایسا لازوال کردار ادا کیا ہے، جو مدتوں  یاد رکھا جائے گا۔

سن اسی کی دہائی میں ایک ایسا امریکی شخص، جو بچپن میں کس دماغی چوٹ کی وجہ سے بے سبب ہنسنے کی بیماری میں مبتلا ہو جاتا ہے۔ اس کی ہنسی بے وقت اور لگا تار ہوتی ہے۔ کامیڈی کی دنیا میں ایک ناکام کیریئر کے بعد، وہ ایک ایسی کمپنی میں ملازم ہے، جو اسپتالوں میں مریضوں کو خوش کرنے کے لیے معاوضے پر جوکر مہیا کرتی ہے۔ جیکوئن روز جوکر کا بہروپ بھرتا ہے اور انھیں ہنساتا ہے۔ اس کی مضحکہ خیز حرکات کو دیکھ کر کئی سر پھرے اسے جسمانی تشدد کا نشانہ بناتے ہیں۔ ان سے بچاو کے لیے وہ ایک پستول ساتھ رکھ لیتا ہے۔

ایک دفعہ ٹرین میں کچھ امیر زادے، اکیلی دوشیزہ کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرتے ہیں۔ ایسے میں جیکوئن کو ہنسی کا وہی دورہ پڑ جاتا ہے، جو اس کا مرض ہے۔ لفنگے اسے اس موقع پر ہنسنے کی سزا دیتے ہیں، تو جوکر ان اوباشوں کو اس پستول سے ہلاک کر دیتا ہے، جو وہ اپنے ہمراہ  لیے پھرتا ہے۔ اس کے بعد فلم کئی نشیب و فراز سے گزر کے، ایک اور المیے پر ختم ہوتی ہے۔

یہ ایسی فلم نہیں، کہ جس کا ذکر کوئی عمومی الفاظ میں کر دے۔ اس کا ایک ایک فریم، ایک ایک مکالمہ، روح میں اتر جانے والا، ایک ان جانے لیکن گہرے غم سے آشنا کرتا ہے۔ ممکنہ طور پر یہ آپ کی زندگی کی پہلی فلم ہو گی، کہ ایک شخص اسکرین پر متواتر ہنس رہا ہے اور آپ رو رہے ہیں۔ یہ حسیات پر چھا جانے والی فلم ہے۔ کسی بھی انسان کے محسوسات کو جھنجھوڑ کر رکھ دینے والی فلم۔ اگر آپ نے ’’دا گرین مائل‘‘ دیکھی ہے اور اس سے متاثر ہوئے ہیں، تو ’’جوکر‘‘ وہی فلم ہے جس کی آپ کو تلاش ہے۔ انتہائی پر اثر اسکرین پلے اور بہت اعلیٰ بیک گراونڈ میوزک سے مزین۔

وہ مناظر خاص ہیں، جب ڈائریکٹر جوکر کے کلوز اپ لیتا ہے تو آپ اپنی آنکھوں میں نمی پاتے ہیں۔ جیکوئن نے شاندار اداکاری کی ہے۔ اپنے لہجے کو نارمل رکھتے ہوئے تھوڑا سا مختلف بنانا، اسی کا خاصہ ہے۔ آی ایم بی ڈی پر نو اعشاریہ ایک ریٹنگ کے ساتھ، میرے خیال سے یہ فلم آٹھ آسکر ضرور اٹھائے گی۔ ٹوڈ اور جیکوئن، زندہ باد!

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •