ریاست سے جھوٹ بلوانے والے پاکستان کے اصل دشمن ہیں: حامد میر

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سینئر تجزیہ کار صحافی حامد میر نے کہا ہے کہ ریاست کا عوام سے رشتہ کمزور کرنے والے پاکستان کے دشمن ہیں۔ آصف زرداری پر سنسرشپ لگائی گئی تو کہا گیا کہ وہ انڈرٹرائل ہے۔ مریم نوازپر سنسرشپ لگائی تو پوچھا کہ ان کا کیا جرم ہے، کہا گیا کہ یہ سزیافتہ ہیں۔ اب مولانا فضل الرحمان پر پابندی عائد کردی ہے اور کہتے ہیں ان کو نہیں دکھانا۔ ہم نے پوچھا کہ اب کیا مسئلہ ہے؟ کہتے ہیں کہ امن وامان کیلئے خطرہ بن گئے ہیں۔ دکھ ہوتا ہے جب ریاست جھکی ہوئی نظروں سے جھوٹ بولتی ہے اور عوام کو سب پتا ہوتا ہے۔

حامد میر نے کہا کہ 18 اکتوبر کو سینیٹ کی انسانی حقوق کمیٹی میں پیمرا اور وزارت اطلاعات کے حکام کو بلایا گیا تھا۔ ان سے پوچھا گیا کہ آپ نے مولانا فضل الرحمان پر سنسرشپ کیوں لگایا؟ پیمرا والے کہتے ہیں، ہم نے نہیں لگایا۔ سینیٹ کمیٹی کے چیئرمین نے پیمرا سے پوچھا کہ آپ کو یقین ہے، آپ نے کسی کو پابندی کا پیغام نہیں بھیجا؟ چیئرمین نے کہا کہ آپ کو یقین ہے آپ سچ بول رہے ہیں؟ لیکن ان کی نظریں جھک گئیں اور آئیں بائیں شائیں کرنے لگے۔

حامد میر نے کہا کہ مجھے دکھ ہوتا ہے کہ جب ریاست جھکی جھکی نظروں کے ساتھ جھوٹ بولتی ہے لیکن پتا نہیں کس نے اس ریاست کو مجبور کیا ہے کہ وہ جھوٹ بول رہی ہے۔ جب ریاست جھکی جھکی نظروں کے ساتھ جھوٹ بولتی ہے تو عوام کو پتا ہوتا ہے کہ ریاست جھوٹ بول رہی ہے۔ وہ لوگ جو ریاست کو جھوٹ بولنے پر مجبور کرتے ہیں وہ ریاست کا عوام کے ساتھ رشتہ کمزور کر رہے ہوتے ہیں، وہی لوگ پاکستان کے اصل دشمن ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •