بھارتی اداکارہ کاجل کے انٹیمیٹ سین ویب سیریز کے نام پر فحش سائٹ پر لیک کر دیے گئے: وڈیو

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بھارتی فلم انڈسٹری میں کاسٹنگ کاؤچ کی کہانیاں اکثر سامنے آتی رہتی ہیں۔ لیکن اس مرتبہ فلمی دنیا کے متعلق ایک بھیانک سچ سامنے آیا ہے۔ 23 سالوں سے ٹی وی اور فلموں کی دنیا سے وابستہ ڈائریکٹر روشن گیری کا دعویٰ ہے کہ ایک آن لائن کنٹینٹ پرووائڈ کرنے والی ایپ نے ان کے ذریعے بنائی گئی ویب سیریز کے ایپی سوڈس کو ایڈلٹ سائٹ پر شیئر کردیا ہے۔ وہیں اس طرح کے دھوکے کا شکار ہوئی اداکارہ کاجل بھی سامنے آئی ہیں۔ کاجل کے فلمائے گئے انٹیمیٹ سین کے را فوٹیج کو پورن سائٹ پر ڈال دیا گیا ہے۔ روشن گیری کی اس ویب سیریز کا نام “ڈی کوڈ” ہے۔ جس میں کئی بڑے ٹی وی کے ستارے شامل ہیں۔

روشن گیری نے اپنے انٹرویو میں بتایا، “میں 23 سال سے انڈسٹری میں کام کر رہی ہوں لیکن اس واقعے نے مجھے چونکا دیا ہے۔ میں اپنی ویب سیریز ایک ایپ کیلئے بنائی تھی جس میں کچھ انٹیمیٹ سین بھی تھے لیکن یہ سین ویب سیریز کیلئے تھے پر جب میری ویب سیریز کا پرومو سامنے آیا تو مجھے کچھ دوستوں کا فون آیا کہ میری سیریز کا کنٹینٹ پورن سائٹس پر ڈال دیا گیا ہے۔ جب میں نے ایپ سے جڑے لوگوں سے بات کی تو انہوں نے کہا کہ اس میں کچھ سین ہی لیک ہوئے ہیں۔ پوری کی پوری ویب سیریز سائٹ پر ایپ کے لوگوں کے ساتھ نظر آ رہی ہیں۔ روشن کا الزام ہے کہ پورن سائٹ پر یہ کنٹینٹ لیک کرنے کا کام الو نام کے ایپ نے ہی کیا ہے۔

وہیں “بلیک کافی” نام کی ایک ویب سیریز میں شامل اداکارہ کاجل کے ساتھ بھی کچھ ایسا ہی ہوا ہے۔ کاجل کا کہنا ہے کہ اسی ایپ کے ڈائریکٹر نے ان کی ویب سیریز کے بھی انٹیمیٹ سین پورن سائٹ پر شیئر کر دئے۔ کاجل نے بتایا، “میری ویب سیریز کا نام ہے “بلیک کافی”، جو میں نے دیپک پانڈے کی ساتھ کی۔ میں نے تین سال سے کوئی انٹیمیٹ سین نہیں کیا تھا لیکن پھر میں نے سوچا کہ آخر سب کر ہی رہے ہیں اور ویب سیریز میں تو چل رہی ہے تو ٹھیک ہے، میں بھی کوشش کرتی ہوں لیکن آپ اپنے ڈائریکٹر پر بھروسہ کرتے ہیں۔ میرے سین میں کسی اور کی پیچھے سے آوازیں ڈال دی گئی اور وہ بہت فحش تھیں’۔

کاجل نے کہا، میں نے ہی وہ کام کیا ہے لیکن میں کیسے بتاؤں کہ یہ آواز میری نہیں ہے۔ میری پوری سچائی میں جانتی ہوں، میرا ڈائریکٹر جانتا ہے پر میرا کنبہ نہیں جانتا’۔ انہوں نے کہا میرے کام کو گندے طریقے سے دکھایا گیا۔ میں چار مہینوں تک ڈپریشن میں تھی اور سامنے نہیں آئی۔ میں نے خود کو مارنے تک کی کوشش کی۔ میرے کنبے کو سمجھانا مشکل تھا۔ میں انہیں سمجھا نہیں پارہی تھی کیونکہ میں خود ڈپریشن میں تھی۔ کاجل نے کہا میں اب سامنے آئی ہوں کیونکہ اب میرے پاس کھونے کیلئے کچھ نہیں ہے۔ آپ نے میری دھجیاں اڑادیں لیکن اب میں سب کے سامنے سچ بتا کر رہوں گی

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •