کرینہ کپور اپنی سوتیلی بیٹی سارا علی خان سے ون نائٹ اسٹینڈ پر سوال پوچھ کر خود ہی گھبرا گئیں: دیکھیں ویڈیو

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بالی ووڈ کے مشہور اداکار سیف علی خان اور ان کی پہلی اہلیہ امرتا سنگھ کی بیٹی سارا علی خان، سیف علی خان کی دوسری اہلیہ کرینہ کپور کے چیٹ شو میں شامل ہوئیں۔ اس شو میں کرینہ نے سارا علی خانسے ان کی لو لائف اور ذاتی زندگی سے وابستہ کئی سوالات بھی پوچھے۔ اتنا ہی نہیں کرینہ نے سارا علی خا نسے ان کے ون نائٹ اسٹینڈ اور فون پر ناٹی میسیج بھیجنے جیسے ذاتی سوال بھی پوچھے۔ سارا علی خان اپنی سوتیلی ماں کے اس شو میں اپنے موٹاپے پر بھی بات کرتی نظر آئیں ۔

کرینہ کپور خان کے ریڈیو شو “واٹ وومین وانٹ” کے دوسرے سیزن میں سارا علی خان نے آج کل کی محبت پر بات کی۔ کرینہ نے سارا علی خان سے پوچھا کہ کیا انہوں نے کبھی کسی کو ناٹی میسیج بھیجے ہیں۔ ساتھ ہی سوال پوچھتے ہی کرینہ نے کہا کہ میں یہ نہیں جاننا چاہتی یا امید کرتی ہوں کہ تمہارے والد یہ سب سن رہے ہوں۔

اس سوال کے جواب میں سارا علی خان کہتی ہیں کہ ہاں۔ یہ سنتے ہی کرینہ کہتی ہیں، یہ میں تمہارے والد کو بتا سکتی ہوں نا؟ جس کے جواب میں سارا علی خان کہتی ہیں ہاں، وہ شاید یہ شو دیکھیں گے۔ کرینہ کہتی ہیں کہ ٹھیک ہے سیف، میں گھر آکر بتاوں گی۔ تو سارا علی خان فوراً ہی کہتی ہیں، نہیں ایسا مت کرنا ۔

اس شو میں کرینہ کپور نے سارا علی خان سے ون نائٹ اسٹینڈ سے متعلق بھی سوال پوچھا۔ جس کے جواب میں سارا کہتی ہیں کہ نہیں۔ حالانکہ اس سوال کو پوچھنے سے پہلے کرینہ کہتی ہیں کہ معلوم نہیں یہ مجھے تم سے پوچھنا چاہئے یا نہیں لیکن ٹھیک ہے، ہم ماڈرن فیملی ہیں، کیا تم نے کبھی ون نائٹ اسٹینڈ کیا ہے۔ اس پر سارا کا نفی میں جواب سن کر کرینہ کہتی ہیں تھینکس گاڈ، یہ سکون کی بات ہے۔

شو کے دوران کرینہ نے سارا سے پوچھا کہ 20 سال پرانے رشتے میں اور آج کی محبت کے رشتے میں کیا تبدیلی آئی ہے؟ اس پر سارا علی کہتی ہیں کہ مجھے لگتا ہے کہ اب خواتین اپنے ساتھی کو کھل کر بتانے لگی ہیں کہ آخر انہیں اس رشتے میں کیا چاہئے جبکہ پہلے ایسا نہیں ہوتا تھا۔ سارا نے مزید کہا کہ اس زمانے میں ایک طرح سے ایک شرم ہوتی تھی، جو خواتین کیلئے ایک صحیح طریقہ بھی سمجھا جاتا تھا ، لیکن اب مجھے لگتا ہے کہ خواتین کافی کھلی ہو گئی ہیں اور سامنے سے بولتی ہیں کہ انہیں اپنے ساتھی سے کیا چاہئے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *