انتقال سے قبل نعیم الحق کی جانب سے جاری کیا گیا آخری پیغام

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

پاکستان تحریک انصاف کے مرحوم رہنما نعیم الحق نے انتقال سے قبل اپنے آخری پیغام میں ملاقات کیلئے آنے اور خیر و عافیت دریافت کرنے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق تحریک اںصاف کے مرحوم رہنما نعیم الحق کا انتقال سے قبل جاری کیا گیا آخری پیغام سامنے آیا ہے۔ نعیم الحق شدید علالت کی وجہ سے سوشل میڈیا سے بھی دور تھے اور انہوں نے اپنا آخری پیغام گزشتہ ماہ  سترہ جنوری کو جاری کیا تھا۔

نعیم الحق نے اپنے پیغام میں وزیراعظم عمران خان کا خصوصی شکریہ ادا کیا تھا۔

نعیم الحق نے کہا کہ وہ شکرگزار ہیں کہ وزیراعظم ان سے ملاقات کیلئے آئے اور ان کی خیریت بھی دریافت کی۔ وزیر اعظم کی سیاست اور موجودہ حالات پر گھنٹہ بھر طویل گفتگو بصیرت افروز تھی۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف کے بانی و سینئر رہنما اور وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی نعیم الحق انتقال کر گئے ہیں۔ نعیم الحق طویل عرصے سے بلڈ کینسر کے عارضے میں مبتلا تھے اور ان کا علاج جاری تھا۔

بتایا گیا ہے کہ نعیم الحق اسلام آباد میں مقیم تھے اور طبیعت مزید خراب ہونے پر کل ہی اسلام آباد سے کراچی آئے تھے اور انہیں گزشتہ رات ہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ ہفتے کے روز ان کی طبیعت مزید بگڑ گئی تھی جس کے بعد انہیں کراچی کے ایک نجی ہسپتال کے آئی سی یو میں منتقل کر گیا تھا، جہاں وہ انتقال کر گئے۔ نعیم الحق کو پاکستان تحریک انصاف وزیراعظم عمران خان کا قریب ترین ساتھی بھی سمجھا جاتا تھا۔

سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ عمران خان کے ہر فیصلے میں نعیم الحق کی مشاورت شامل ہوتی تھی اور تحریک انصاف کو اقتدار دلوانے میں انہوں نے عمران خان کا ہر قدم پر ساتھ دیا تھا۔ نعیم الحق کے انتقال پر وزیراعظم عمران خان بھی گہرے رنج و غم کا شکار ہیں۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ میرے انتہائی قریبی اور پرانے دوست نعیم الحق انتقال کرگئے ہیں، میں اپنے پرانے دوست سے محروم ہو گیا ہوں۔ نعیم الحق ان 10 پی ٹی آئی ممبران میں شامل تھے جن کا شمار بانی ممبران میں ہوتا تھا۔ نعیم الحق پارٹی کے ساتھ بڑے وفادار تھے۔ تحریک انصاف کی 23 سالہ جدوجہد میں ہر مشکل اور آزمائش میں وہ میرے ساتھ ڈٹ کرکھڑے رہے۔ انہوں نے ہمیشہ میری اس وقت مدد کی جب ہم انتہائی مشکل میں گھرے ہوتے تھے۔

عمران خان نے کہا کہ میں نے پچھلے دو برس میں دیکھا کہ نعیم الحق نے بڑی ہمت اور حوصلے کے ساتھ کینسر مرض کا مقابلہ کیا۔ آخری وقت تک وہ پارٹی امور اور سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لیتے رہے، حتی کہ وہ کابینہ اجلاسوں میں بھی باقاعدگی سے آتے تھے۔نعیم الحق کے انتقال سے ان کا پارٹی میں کبھی خلاء پُر نہیں ہوسکے گا۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *