بچہ جمہورا نافرمان ہو گیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

“بچہ جمہورا۔”

“جی استاد۔”

“ادھر آ۔”

“آ گیا۔”

“میرے ہاتھ میں کیا ہے؟”

“ڈنڈا ہے۔”

“بچہ جمہورا۔”

“جی استاد۔”

“گھوم جا۔”

“گھوم گیا۔”

“کہاں پہ ہو؟”

“سندھ میں۔”

“سندھ میں کیا ہے؟”

“لاک ڈائون ہے استاد۔”

“کس نے کیا؟”

“سید سائیں نے کیا۔”

“بچہ جمہورا۔”

“جی استاد۔”

“گھوم جا۔”

“گھوم گیا۔”

“کہاں پہ ہو؟”

“بلوچستان میں۔”

“بلوچستان میں کیا ہے؟”

“لاک ڈائون ہے استاد۔”

“لاک ڈائون کس نے کیا؟”

“کمال نے کمال کر دکھایا ہے۔”

“بچہ جمہورا۔”

“جی استاد۔”

“گھوم جا۔”

“گھوم گیا۔”

“کہاں پہ ہو؟”

“خیبر پختونخواہ میں۔”

“خیبر پختونخواہ میں کیا ہے؟”

“لاک ڈائون ہے استاد۔”

“کیا۔۔۔ کیا بولا بچہ۔۔۔!؟”

“جو تم نے سنا، ہم وہی بولا استاد۔”

“خیبر پختونخواہ میں کس کے حکم سے لاک ڈائون ہوا۔۔۔!؟”

“بندے اپنی مرضی کے مالک ہیں۔ خود ہی اپنے گھروں کو چلے گئے تھے۔”

“تو پھر لاک ڈائون کا اعلان کیوں اور کس نے کیا۔۔۔!؟”

“چھوٹے خان نے خود فیصلہ کیا اور اعلان کر دیا۔”

“بچہ جمہورا۔”

“جی استاد۔”

“گھوم جا۔”

“گھوم گیا۔”

“کہاں پہ ہو؟”

“پنجاب میں۔”

“پنجاب میں کیا ہے؟”

“لاک ڈائون ہے استاد۔”

“جمہورا۔۔۔!!”

“جی استاد۔”

“تم نے غلط جواب دے کر تماشائیوں کے سامنے میرا خانہ خراب کر دیا۔۔۔!”

“تماشائی نہیں ہیں استاد۔”

“کیا۔۔۔!!!”

“جی استاد، تماشائی اپنے گھروں کو چلے گئے ہیں۔”

“کیوں چلے گئے ہیں؟”

“کیوں کہ پنجاب میں بھی لاک ڈائون ہے۔”

“پنجاب میں کس نے کیا لاک ڈائون؟”

“میں نے کیا استاد۔”

“بچہ جمہورا۔۔۔!”

“جی استاد۔”

“گھوم جا۔”

“اب نہیں گھومے گا۔”

“میرے ہاتھ میں کیا ہے۔”

“تمہارے ہاتھ میں ڈنڈا ہے۔ جو کرنا ہے کر لے استاد۔۔۔!!”

“بچہ ۔۔۔ بچہ جمہورا۔۔۔”

“جی استاد۔”

“اب میں کیا کروں۔۔۔!”

“کچھ نہیں استاد ۔۔۔ اب تو گھر چلا جا۔۔۔”

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply