کرہ ارض پر پھیلے ہوئے وہ داغ دار مناظر جنھیں انسانوں کی مادی خواہشات نے جنم دیا

رچرڈ فشر اور ہاویے ہرشفلڈ - بی بی سی فیوچر

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  


برازیل

Getty Images
برازیل میں کراجس کان دنیا میں خام لوہے کی بڑی کانوں میں سے ایک ہے

جب ہم کسی قیمتی دھات، کوئلے یا دیگر معدنیات حاصل کرنے کے لیے کھدائی کرتے ہیں تو ہم ایک قدیم اور گزرے ہوئے زمانے کا ایک باب بند کر دیتے ہیں۔

مصنف ایسٹرا ٹیلر کے الفاظ میں یہ اشیا ’ایک جمع شدہ ماضی ہیں‘ جو ہمیں بہتے لاووں، جنگلات اور بھاپ اگلتے چشموں کی لازوال کہانیاں سناتے ہیں۔ لاکھوں برس کی اس تاریخ کو ہم مشینوں اور دھماکہ خیز مواد کے حوالے کر کے چند لمحوں میں ختم کر دیتے ہیں۔

انسانوں کو جب سے یہ معلوم ہوا ہے کہ زمین کے اندر بڑے خزانے موجود ہیں تو انھوں نے ان خزانوں کو ڈھونڈنے کے لیے ہر طرف کھدائی کی ہے۔

کان کنی کی وجہ سے ہمارا جدید طرزِ زندگی ممکن ہوا ہے۔ اس کے نتیجے میں فطرت کو پہنچنے والا نقصان زیادہ تر ہمارے گھروں سے بہت دور ہوتا ہے۔

جب آپ کان کنی کے اثرات کو اپنی آنکھوں سے دیکھیں تو اپنے زیرِ استعمال اشیا کے بارے میں آپ کی سوچ غیر محسوس طور پر تبدیل ہو سکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

کورونا وائرس کے باعث انسانی سرگرمیوں میں کمی اور جنگلی حیات پر اثرات

ریت: جس کے لیے لوگ جان بھی لینے کو تیار ہیں

ایمازون کے جنگلات میں ’بہتے سونے کے دریاؤں‘ کی حقیقت

یہاں تک کے یہ الفاظ بھی آپ تک معدنی اشیا کے ذریعے ہی پہنچ رہے ہیں۔ آپ کے کمپیوٹر یا موبائل فون کی سکرین کے پیچھے جو اشیا لگی ہوئی ہیں وہ ان دھاتوں سے بنی ہیں جو لاکھوں برس سے چٹانوں میں دبی ہوئی تھیں۔

ہم نے جائزہ لیا ہے کہ کان کنی نے کس طرح ہزار ہا طریقوں سے کرہ ارض کا چہرہ بدل دیا ہے۔ زمین کا فضائی جائزہ لینے سے اس کا اندازہ ہوتا ہے۔ چاہے وہ دور دور تک پھیلے ہوئے غیر فطری پتلے پتلے تالاب ہوں یا انسانی انگلیوں کے نشانات کی طرح پھیلے ہوئے مناظر ہوں۔

اگر یہ خام دھاتیں اور معدنیات ایک منجمد ماضی ہیں تو مستقبل افسوسناک طور پر زمین کا داغوں سے بھرا چہرہ ہے۔

سنجیانگ

Getty Images
چین کے علاقے سنجیانگ میں دنیا کی سب سے بڑی کانوں کا سلسلہ موجود ہے جہاں مختلف اقسام کی 84 معدنیات نکالی جا رہی ہیں
شنگھائی

Getty Images
چین کے صوبے شنگھائی میں زمرد کی جھیل کانوں کا ایک ایسا زون ہے جو اب قابل استعمال نہیں اور جہاں نمک اور دیگر معدنیات کو بڑے بڑے تالابوں میں چھوڑ دیا گیا ہے
سپین

Getty Images
سپین کے ہیولوا صوبے میں ٹنٹو نامی کان کنی کے علاقے میں لوہے کی معدنیات زنگ آلود حالت میں موجود ہیں
سپین کا ہیولوا صوبہ

Getty Images
پانی میں ملی ہوئی لوہے کی معدنیات مصوری کے رنگوں کی طرح دور تک منظر پر پھیلی ہوئی ہیں
سپین کا ہیولوا صوبہ

Getty Images
جب معدنیات کو ہوا لگتی ہے تو کیمیائی ردِعمل سے ان کے رنگ بدل جاتے ہیں
امریکہ

Getty Images
امریکہ کی ریاست یوٹاہ میں بنگہم کینیئن نامی کان دیکھنے میں ایسی لگتی ہے جیسے انگلیوں کے نشانات کے پیچ و خم
میکسیکو

AFP
میکسیکو کی ریاست گویریرو میں سونے کی کان
برازیل

AFP
برازیل میں ایمیزون کے علاقے میں سونے کی کان
ایمیزون

Getty Images
ایمیزون کا وہ حصہ جو ملک پیرو میں شامل ہے۔ اس علاقے میں مادرے ڈی ڈیوس نامی دریا میں سونے کی غیر قانونی کان کنی کے نتیجے میں جنگلات کی تباہی کا منظر
چلی

Getty Images
چلی کے علاقے رینکاگوا میں وہ تالاب جس میں تانبے کی کان کنی سے حاصل ہونے والی ضمنی معدنیات جمع کی جاتی ہیں
چلی

Getty Images
چلی کی اہم معدنیات میں تانبا بھی شامل ہے
روس

Getty Images
روس میں لیوویخا نامی گاؤں کے قریب کوپر سلفیڈ کی کان کے قریب نارنجی رنگ کا پانی جنگل کے درمیان سے گزر رہا ہے
انڈیا

Getty Images
انڈیا کی ریاست جھارکھنڈ میں ماہاگما کے قریب ایک کھلی ہوئی کوئلے کی کان دور افق تک پھیلی ہوئی ہے
ترکی

Getty Images
ترکی میں وہ کان جہاں سے لیتھیئم نکالا جاتا ہے جو بیٹریوں کے لیے ایک انتہائی اہم جزو ہے
نیمیبیا

Getty Images
نیمیبیا میں یورینیئم کی کان جو دنیا میں یورینیئم کی بڑی کانوں میں سے ایک ہے
روس

Getty Images
روس میں ہیروں کی کان اس جانب اشارہ کرتی ہے کہ ہمارے بعد آنے والی نسلیں کیا دریافت کریں گی؟ ہم نے جس طرح وسائل کو استعمال کیا ہے وہ اس کے بارے میں کیا سوچیں گی؟

تمام تصاویر کے جملہ حقوق محفوظ ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 18537 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp