لاک ڈاؤن سے غریب عوام مشکل کا شکار ہو رہے ہیں، عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے سندھ میں کورونا وائرس کے باعث لگائے گئے لاک ڈاؤن کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ لوگوں کو بھوکا رکھیں گے، لاک ڈاؤن سے غریب عوام مشکل کا شکار ہو رہے ہیں، جہاں کورونا کی شرح زیادہ ہے وہاں اسمارٹ لاک ڈاؤن لگائیں۔

وزیراعظم عمران خان نے عوام کے ٹیلی فونک سوالات کے براہ راست جواب دیتے ہوئے کہا پاکستان میں کورونا کی چوتھی لہر آئی ہوئی ہے، ڈیلٹا ویرینٹ سب سے زیادہ خطرناک ہے، کورونا سے نمٹنے کے بہترین اقدامات میں پاکستان تین ملکوں میں ایک ہے۔

عمران خان نے کہا کہ سوائے پاکستان کے ساری دنیا میں رمضان میں مساجد بند ہوئیں، ایس او پیز میں سب سے آسان ماسک پہننا ہے، بند جگہ میں جہاں لوگ زیادہ ہیں وہاں ماسک پہنیں۔

اُنہوں نے کہا کہ سندھ حکومت کی کوشش تھی لاک ڈاؤن کردیں جبکہ اسمارٹ لاک ڈاؤن کا فیصلہ بالکل درست ہے جبکہ ہمیں یہ بھی دیکھنا ہے کہ لاک ڈاؤن میں غریب طبقہ کیسے گزارا کرے گا لیکن جب ان سوالات کا جواب نہ ہو تو کبھی لاک ڈاؤن نہ کریں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بھارتی حکومت نے سوچے سمجھے بغیر لاک ڈاؤن کردیا، بھارتی حکومت نے پیسے والے اوپر کے طبقے کا سوچا، آج ہماری اور بھارت کی معیشت کا فرق دیکھ لیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کے لیے پیغام ہے کہ لاک ڈاؤن کریں گے تو لوگ بھوکے رہیں گے، ہمیں کسی صورت لاک ڈاؤن کرکے اپنی معیشت تباہ نہیں کرنی۔

Comments - User is solely responsible for his/her words