ظلم کو ظلم کہتے ہو۔۔۔بڑے ظالم ہو۔۔

”سرفروشی کی تمنا اب ہمارے دل میں ہے“ بڑا ہی غلیظ نعرہ محسوس ہوتا ہے۔ اسی لئے تو فیض فیسٹیول میں لگائے گئے اس نعرے پر بے تحاشا تنقید کی جا رہی ہے۔ تنقید کیجیے! ضرور کیجیے! تنقید کاپورا پورا حق ہے آپ کو، بلکہ جناب یہ حق آپ ہی کے گھر کی لونڈی تو…

Read more

فیض میلہ اور معاشرے کے معمار

”ہم دیکھیں گے! “ کی تحریر کے ساتھ فیض احمد فیض کہ جوانی کی تصویر داہنی طرف موجود ہال نمبر 1 کے دروازے کے اوپر لٹک رہی تھی تو سامنے کی سرخ عمارت پر ”آج پابجولاں چلو“ کے الفاظ فیض کی تصویر کے ساتھ کسی مفتوح فوج کے جھنڈے کی مانند ایک بینر کی صورت…

Read more