نواز شریف کے انسانی حقوق اور پروپیگنڈے کی طاقت؟

ہماری آج کی دنیا اتنی مصروف ہے کہ کسی کے پاس اپنی فیلڈ سے ہٹ کر سوچنے سمجھنے یا تحقیق کرنے کے لیے وقت ہی نہیں ہے اس کا نقصان یہ ہے کہ جس چیز کا جتنا زیادہ پروپیگنڈہ کر دیا جاتاہے لوگ بالعموم اُس کو اتنا ہی سچا یا درست مان لیتے ہیں یہی وجہ ہے کہ جن لوگوں کے پاس طاقت یا اتھارٹی ہوتی ہے ان کی عمومی خواہش یہ ہوتی ہے کہ تمام تر پروپیگنڈہ اُن کی حمایت اور مخالفین کی مخالفت میں ہونا چاہیے بلکہ مخالفین کی تو آواز ہی بالجبر دبا دی جانی چاہیے۔ بلاشبہ سماج میں ایسے لوگ بھی ہوتے ہیں جو فطرتاً حقائق کی پرکھ میں گہرائی تک جاتے ہیں پروپیگنڈے کا اثر لیے بغیر ایسے لوگ سچائی کا ادراک رکھتے ہیں لیکن کم ازکم ہماری سوسائٹی میں ایسے لوگ آٹے میں نمک برابر ہیں۔

Read more