سنہ 2019 میں آنے والی پاکستانی فلمیں

2018 پاکستانی فلمی صنعت کے لیے بہت اچھا ثابت نہیں ہوا اور 17 میں سے صرف 3 فلمیں ایسی تھیں جنہوں نے کچھ قابلِ ذکر سرمایہ کمایا۔ زیرِ نظر مضمون میں بالترتیب ہم سال 2019 کا جائزہ لیتے ہیں کہ یہ سال پاکستانی سینیما کے لیے کیا کیا لا رہاہے؟ جنوری میں ریلیز ہورہی ہے ’گُم‘ ۔ یہ فلم ایک اشتہاری مجرم اور مجبور باپ کی کہانی ہے جو بدقسمتی سے حالات کے بھنور میں پھنس جاتا ہے۔ اس فلم کو کنزہ ضیاء اور عمار لاثانی نے مل کر ڈائریکٹ کیا ہے یہ دونوں نیویارک فلم اکیڈمی سے تعلیم یافتہ ہیں اور اس فلم میں سمیع خان، شامین خان اور شمعون عباسی کام کررہے ہیں۔

اس فلم کو اب تک 8 بڑے عالمی فلم فیسٹیولز میں دکھایا جاچکا ہے اور اطلاعات ہیں کہ اسے وہاں بہت پزیرائی ملی تھی۔ ممکنہ طور پر مارچ میں پاکستانی کی خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے کے موضوع جس میں بھارتی اداکارہ آدیتی سنگ ایک آئٹم نمبر کررہی ہیں۔ اس میں اپنے کیریئر کا آغاز کررہی ہیں نئی اداکارہ مدیحہ زیدی۔ اس مرتبہ عید کچھ زیادہ میٹھی ہونے والی ہے، کیونکہ عید پر آرہی ہے اب تک کی سب سے بڑی پاکستانی پنجابی فلم ’دی لیجنڈ آف مولاجٹ‘ ، یہ وہ فلم ہے جس کا سب کو برسوں سے انتظار ہے۔

Read more

مولا جٹ پر مصطفی قریشی کو جواب

یہ 1990 کی دہائی کی بات ہے جب پاکستان میں سینیما گنڈاسا کلچرمیں ڈوبا ہوا تھا۔ ایسے میں سید نور صاحب کی فلم جیوا نے شائقین کو ایک بار پھر سے سینیما گھروں کی جانب کھینچا اور دیکھتے ہی دیکھتے کئی فلمیں بننے لگیں۔

اسی زمانے میں ٹی وی پر ایک پروگرام شروع ہوا جس کا نام تھا لالی ووڈ ٹاپ ٹین۔ اگر میری یادداشت میرا ساتھ چھوڑ نہیں گئی تو نادیہ خان اس کی میزبانی کیا کرتی تھیں۔ اس کی ایک قسط میں سید نور صاحب نے کہہ دیا کہ پاکستان کا سینیما یہ ہے جو ہم بنا رہے ہیں۔ گجر اور جٹ کو گنڈاسہ پکڑا کر مار پیٹ دکھانا سینیما نہیں۔

اس پر مشہور پنجابی فلم مولا جٹ کے ہدایتکار یونس ملک نے ایک بیان داغا کہ ہماری فلم مولا جٹ نے پاکستان کے سینیما کو 5 سال چلایا اور وہ کامیاب ترین فلم تھی۔ سید نور ویسی ایک فلم بناکر دکھائیں۔

Read more

زیرو: ایک غیرمعمولی داستانِ محبت

شاہ رخ خان کی فلم زیرو کا آغاز تو انتہائی شاندار ہے اور تقریباَ َ دو گھنٹے تک یہ فلم مسکراہٹ اور قہقہے بکھیرتی ہے تاہم اختتام پر آکر یہ یک دم ڈھلان پر لڑھکنے لگتی ہے جس سے پہلے دوگھنٹے میں طاری ہونے والا تاثر زائل ہوجاتا ہے۔

شاہ رُخ خان بوّا کے کردار میں کئی مقامات پر جہاں دل چھو لیتے ہیں وہیں ان کے تیکھے اور کاٹ دار جملے کہیں ہنسانے اور کہیں مسکرانے پر مجبور کرتے رہتے ہیں۔

بوّا سنگھ میرٹھ کا رہنے والا ایک 38 سالہ شخص ہے جو قد میں بونا ہے۔ اس کے والد بہت امیر شخص ہیں جن کی دولت وہ اُڑاتا رہتا ہے۔ اسے فلم اسٹار ببیتا کماری (کترینہ کیف) سے پیار ہے جبکہ تاہم اس تک اس کی پہنچ نہیں اسی لیے وہ ایک میرج بیورو میں اپنا نام لکھوا کر لڑکیاں دیکھتا رہتا ہے۔ اس طرح اس کی ملاقات عافیہ (انوشکا شرما) نامی ایک خلائی سائنسدان سے ہوتی ہے تو جسمانی طور پر نیم مفلوج ہوتی ہے اور کسی طرح اسے اس سے پیار ہو ہی جاتا ہے۔

Read more

پنکی میم صاحب: اچھی کہانی مگر کمزور فلم

پاکستانی فلم پنکی میم صاحب نے مجھے بالکل مایوس نہیں کیا، کیونکہ میں اس فلم سے کسی قسم کی توقعات وابستہ کرکے نہیں گیا تھا۔

پنکی میم صاحب کہ کہانی کا خلاصہ یہ ہے کہ پاکستان کے ایک چھوٹے سے گاؤں کی ایک بہت غریب سی لڑکی پنکی (ہاجرہ یامین) گھریلو ملازمہ کی نوکری کے لیے دبئی جاتی ہے۔ جہاں وہ مہر (کرن ملک) کے گھر میں کام کرتی ہے جو ایک بچے کی ماں ہے اس کا شوہر حسن (عدنان جعفر) دبئی میں انویسٹمینٹ بینکر ہے ہے اور یہ لوگ دبئی کے ایک بہت ہی امیرعلاقے جمیرا میں رہتے ہیں۔

کرن ملک کا زیادہ وقت بیگمات کے ساتھ گپ شپ میں گزرتا ہے مگر وہ کتاب لکھنے کی جدوجہد کررہی ہے اور اچھا لکھنے میں ناکامی کی وجہ سے بہت الجھن اور دباؤ کا شکار ہے۔

Read more

شاہ رخ خان کی فلم ’زیرو‘ کی پاکستان میں نمائش خطرے میں

پاکستان کی فلم ڈسٹری بیوشن کمپنیز کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ شاہ رُخ خان کی فلم ’زیرو‘ کو خریدنے میں اس لیے ہچکچا رہے ہیں کیونکہ سال 2018 میں بڑے ستاروں کی فلموں کے پے در پے فلاپ ہونے کے بعد انہیں خدشہ ہے کہ مذکورہ فلم بھی کہیں انہیں نقصان نہ…

Read more

چوہدری اسلم کی زندگی پر فلم

پاکستان کے معروف پولیس افسر محمد اسلم خان المعروف چوہدری اسلم کی زندگی پر فلم بنائی جارہی ہے، جس میں پاکستان کے نامور اداکاروں کے ساتھ ساتھ کچھ نئے چہرے بھی متعارف کروائے جارہے ہیں۔ پاکستانی ہدایتکار عظیم سجاد جو اس سے پہلے 8969 کے نام سے ایک پراسرارقتل کے موضوع پر ایک انتہائی کم…

Read more

کمزور و بے جان ٹھگس آف ہندوستان

امیتابھ بچن، عامر خان کی فلم ٹھگس آف ہندوستان کے خوبصورت مناظر آپ کی آنکھوں کی تسکین کا ساماں بن سکتے ہیں مگر کمزور بلکہ بے سروپا کہانی اور مانگے تانگے کے کرداروں نے اسے ایک اچھی فلم بننے سے روک دیا ہے۔ اگرآپ وجے کرشنا اچاریہ کہ دھوم 3 دیکھ چکے ہیں تو یہ…

Read more