عورت مارچ

آٹھ مارچ آیا اور رخصت ہوگیا لیکن اس دفعہ بڑی دھج دکھا گیا۔ حوصلہ افزا بات یہ ہے کہ اگر ہم سماج کو دائیں، بائیں اور لبرل خانوں میں رکھ کے دیکھیں تو ہر طبقے نے اپنی آواز اٹھائی۔ سڑکوں پر بھی اور سوشل میڈیا پر بھی خوب رونق رہی۔ اگر لبرل خواتین اپنی روٹی خود پکانے کا پلے کارڈ اٹھائے ہوئے تھیں تو کچھ مجاہد خواتین نے اعلانیہ نہ صرف روٹی پکانے بلکہ عزت بھی کرنے کا ردعمل دیا۔ اور ہمارے بائیں بازو کی بہنوں کا زیادہ زور اس بات پہ تھا کہ ہم مزدور اور مظلوم عورتوں کے حق میں کھڑے ہیں، لیکن وہ این جی اوز اور لبرل فحاشی ایجنڈے کو لتاڑنا نہ بھولیں۔

Read more