عمران خان نے مخصوص نشستوں پر نامزد خواتین اور اقلیتی اراکین پر بھی یو ٹرن لے لیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

تحریک انصاف نے الیکشن کمیشن میں جمع کرائی جانے والی مخصوص نشستوں کی فہرستیں بدلنے کا فیصلہ کر لیا۔ نجی ٹی وی رپورٹ کے مطابق تحریک انصاف نے ایک اور یوٹرن لیتے ہوئے الیکشن کمیشن میں جمع کرائی جانیوالی مخصوص نشستوں کی فہرستیں بدلنے کا فیصلہ کر لیاہے۔ ذرائع کے مطابق چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نےمخصوص نشستوں کی نئی فہرستیں بنانے کی ذمہ داری خود لے لی اور انہوں نے پارٹی رہنما بابر اعوان کو اس حوالے سے الیکشن کمیشن قوانین سے متعلق قانونی پہلوؤں کا جائزہ لینے کی بھی ہدایت کی ہے۔

ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی نے مخصوص نشستوں کی حتمی فہرستیں 11 جون کو الیکشن کمیشن میں جمع کروائی تھیں جسے بنانے میں شیریں مزاری اور منزہ حسن نے اہم کردار ادا کیا تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ فہرستوں میں حق دار خواتین کو نظر انداز اور منظور نظر کو نوازا گیا اور ریجنل صدور کی سفارشات کو بھی پس پشت ڈالا گیا جس پر شیریں مزاری اور منزہ حسن پر پارٹی کی طرف سے انگلیاں اٹھنے لگی تھیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ عمران خان نے ریجنل صدور اور امیدوار خواتین کی شکایات پر فہرستوں کا جائزہ لیا اور شکایات درست ثابت ہونے پر پہلی فہرستیں مسترد کردیں۔

ذرائع کے مطابق مخصوص نشستوں کی فہرست بنانے میں عجلت بھی ثابت ہوئی جب کہ منزہ حسن نے لاہور الیکشن کمیشن میں فہرستیں جمع کروائیں تھیں۔دوسری جانب شیریں مزاری کا کہنا ہے کہ ان کا مخصوص نشستوں کی تیاری میں کوئی عمل دخل نہیں، منزہ حسن سے عمران خان نے رائے مانگی تھی۔ شیریں مزاری کا مزید کہنا ہے کہ پارٹی چیئرمین عمران خان، عالیہ حمزہ اور شمسہ علی نے مخصوص نشستوں کی فہرستیں تیار کیں اور فہرستیں ان ہی ناموں میں سے بنائی گئی تھیں جو ریجنل صدور نے فراہم کیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •