تحریک انصاف کے امیدواروں میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں: عمران خان بحران سے دوچار

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

پاکستان تحریک انصاف نے کئی امیدواروں کو جاری کردہ پارٹی ٹکٹس واپس لے لیے ہیں۔ تحریک انصاف نے شانگلہ، اوکاڑہ اور گجرات سے قومی اسمبلی سمیت صوبائی اسمبلی کی متعدد نشستوں پر جاری کردہ پارٹی ٹکٹس امیدواروں سے واپس لے لیے ہیں۔ نجی نیوز چینل کے مطابق ابھی مزید کئی امیدواروں سے ٹکٹس واپس لیے جانے کا امکان ہے۔ جن امیدواروں سے ٹکٹ واپس لیے گئے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ وہ اپنے حلقوں میں انتخابی مہم اور تشہیر پر لاکھوں روپے خرچ کرچکے ہیں۔

تحریک انصاف کے ذرائع کا کہنا ہے کہ این اے 10 شانگلہ سے نواز خان کو دیا گیا ٹکٹ واپس لیتے ہوئے ان کی جگہ وقار خان کو ٹکٹ دے دیا گیا ہے۔ اسی طرح این اے 187 اوکاڑہ سے بہادر خان سیہڑ سے بھی ٹکٹ واپس لے لیا گیا ہے جن کی جگہ مجید خان نیازی کو ٹکٹ دیے جانے کا امکان ہے۔ خیبرپختونخوا سے صوبائی اسمبلی کی نشست پی کے 42 سے ملک طاہر اعوان سے ٹکٹ واپس لیتے ہوئے صائمہ خالد نامی خاتون کو ٹکٹ دے دیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ صائمہ خالد نے آزاد امیدوار کی حیثیت سے اپنے کاغذات جمع کرائے تھے۔

تحریک انصاف کی جانب سے جاری کردہ امیدواروں کی فہرست میں گجرات کے چوہدری محمد الیاس اور محمد زبیر کے نام بھی خارج ہیں۔ پی ٹی آئی نے گجرات کے حلقہ این اے 71 سے چوہدری محمد الیاس اور صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 28 گجرات ون سے محمد زبیر کو ٹکٹ جاری کیا تھا جو اب واپس لے لیا گیا۔ چوہدری محمد الیاس تحریک انصاف کے سابق ضلعی صدر رہ چکے ہیں اور وہ 2013 کے عام انتخابات میں پارٹی کے امیدوار بھی تھے۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف نے سکندر حیات بوسن سے بھی ٹکٹ واپس لیا تھا ۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •