میٹرک کی طالبہ کے ساتھ سکول میں اجتماعی جنسی زیادتی: پرنسپل سمیت نو افراد گرفتار

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

 

بھارت میں جنسی درندگی اور اجتماعی زیادتی کے شرمناک واقعات نے اب سکول کا بھی رخ کر لیا ہے۔ اتر کھنڈ میں میٹرک کی طالبہ کو اسی سکول کے چار طالب علموں نے بھرے سکول میں اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جبکہ سکول انتظامیہ نے وحشی طالب علموں کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے واقعہ چھپانے کی کوشش کی جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرتے ہوئے سکول پرنسل سمیت 9 افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

بھارتی نجی ٹی وی کے مطابق ہندوستانی ریاست اتر کھنڈ کے قصبے وکاس نگر میں نجی سکول کی میٹرک کی طالبہ کے ساتھ سکول میں ہی اجتماعی زیادتی کا شرمناک واقعہ پیش آیا ہے۔ اس جرم کا انکشاف اس وقت ہوا جب متاثرہ طالبہ پیٹ میں شدید درد کے باعث ہسپتال میں داخل ہوئی۔ دہلی کی رہائشی متاثرہ طالبہ کا کہنا تھا کہ گذشتہ ماہ کی 14 تاریخ کواس کے کلاس فیلوز اور بارہویں جماعت کے چار طالب علموں نے سکول میں اس کی اجتماعی طور پر عصمت دری کی۔ جب میں نے سکول انتظامیہ کو اپنے ساتھ پیش آنے والے مجرمانہ واقعہ کے بارے میں شکایت کی تو انہوں نے اس حوالے سے کوئی کارروائی کرنے کی بجائے مجھ پرخاموش رہنے کے لئے دباؤ ڈالا گیا۔

جب متاثرہ طالبہ کو سکول انتظامیہ داد رسی اور انصاف دلانے میں ناکام رہی تو وہ یہ معاملہ چائلڈ تحفظ کمیشن میں لے گئی جس پر چائلڈ تحفظ کمیشن نے پولیس اور ریاستی حکومت سے اس معاملہ میں سخت ترین کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس اجتماعی عصمت دری کے واقعہ کی مکمل ذمہ داری سکول انتظامیہ پر عائد ہوتی ہے۔ پولیس نے چاروں ملزم طلبا ء کے ساتھ سکول انتظامیہ کے خلاف بھی مقدمہ درج کر لیا ہے جبکہ پولیس کا دعوی ہے کہ سکول انتظامیہ نے اس معاملے کو دبانے کے ساتھ ساتھ چھپانے کا بھی جرم کیا۔ پولیس نے سکول کے پرنسپل سمیت 9 افراد کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ مرکزی ملزموں کے خلاف تحقیقات جاری ہیں ۔

 

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •