برطانوی خاتون کو جنسی زیادتی کے 2 ہفتے بعد پتہ لگا کہ اسے ریپ کیا گیا تھا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

برطانیہ میں شراب کے نشے میں دھت ایک لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا لیکن اسے دو ہفتے بعد اس وقت اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی کا علم ہوا جب وہ حاملہ ہو گئی۔

میل آن لائن کے مطابق یہ واقعہ جرسی کے شہر سینٹ ہیلر میں پیش آیا۔ مینوئل اگوئیلر نامی یہ 24 سالہ لڑکی پارٹی کے دوران ملزم سے ملی۔ اس نے پارٹی میں بہت زیادہ شراب پی لی اور بے سدھ ہو کر گر گئی، جس پر ملزم اسے اپنے اپارٹمنٹ پر لے گیا اور زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔

دو ہفتے بعد جب لڑکی کی طبیعت اچانک خراب ہوئی اور وہ چیک اپ کے لیے گئی تو ڈاکٹروں نے اسے بتایا کہ وہ ماں بننے والی ہے اور 2ہفتے کی حاملہ ہے۔ تب اسے احساس ہوا کہ اس رات اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا جس پر اس نے پولیس کو رپورٹ کر دی۔ پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے جرسی رائل کورٹ میں پیش کر دیا جہاں اس نے انوکھی توجیح پیش کی۔ اس نے کہا کہ ”مجھے معلوم نہیں تھا کہ لڑکی مانع حمل گولیاں استعمال نہیں کر رہی، چنانچہ میں نے غیرمحفوظ جنسی عمل کر ڈالااور وہ حاملہ ہو گئی۔“

پولیس نے شراب خانے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی عدالت میں پیش کی ہے جس میں ملزم کو لڑکی کو سہارا دے کر لے جاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •