معروف تجزیہ کار مظہر برلاس نے عمران حکومت کی چھ ناکامیوں کی نشاندہی کر دی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

معروف تجزیہ کار مظہر برلاس نے اپنے حالیہ کالم میں عمران حکومت کی کارکردگی کا جائزہ لیتے ہوئے درج ذیل چھ ناکامیوں کی نشاندہی کی ہے۔

(1) ڈالر کی تیزی سے پرواز کیوں ہوئی۔ جو لوگ کرنسی کے اتار چڑھائو کو سمجھتے ہیں یقیناً انہیں پتہ ہے کہ آج بھی ڈالر، ایک سو اڑتیس روپے کا ہونا چاہئے یہ بیس روپے کیوں مہنگا ہے۔ اس کی وجہ انتظامی ناکامی ہے۔

(2) آٹا، دال، چینی اور گوشت تو درآمد نہیں کئے جاتے بلکہ یہ ملکی پیداوار ہیں پھر یہ چیزیں کیوں مہنگی ہو گئیں۔ چار ماہ پہلے خریدی گئی گندم اب کیسے مہنگی ہو گئی۔ چینی پر ٹیکس تین روپے لگا اور وہ اٹھارہ روپے مہنگی ہو گئی۔ انتظامی کمزوریوں کی وجہ سے مہنگائی ہوئی جس سے عمران خان کی مقبولیت کم ہوئی۔

 (3)  عمران خان نے کہا تھا کہ وہ اپنے وزراء کی کارکردگی کا جائزہ لیا کریں گے۔ ناقص کارکردگی کی بنیاد پر وزراء کو فارغ کریں گے، وہ ایسا کیوں نہ کر سکے۔

(4)  عمران خان نے کرپشن کے خلاف مہم چلا کر لوگوں سے ووٹ لئے مگر آج ان کے دائیں بائیں ایسے افراد موجود ہیں جن پر کرپشن کا الزام ہے ۔ عمران خان کو بہت سے لوگوں کا پتہ ہے۔ عمران خان ایسے لوگوں سے متعلق کوئی بڑی کارروائی نہیں کر سکے۔ اگر وہ بی آر ٹی پشاور سے متعلق تین چار افراد کو لٹکا دیتے تو لوگ انہیں پسند کرتے مگر دو رخی پالیسی لوگوں کو پسند نہیں۔

(5) پاکستانیوں کا خیال تھا کہ عمران خان کرپٹ مافیا پر مضبوط ہاتھ ڈالیں گے، انہیں اے کلاس جیلیں بھی نہیں ملیں گی، کرپٹ عناصر کو سہولیات نہیں ملیں گی مگر یہ سب کچھ ہوا، سہولتیں بھی دی گئیں، اس سے لوگوں میں خان صاحب کی مقبولیت کم ہوئی۔

(6)  ریاست مدینہ میں جو کچھ نظر آنا چاہئے تھا، وہ نظر نہیں آ رہا۔ اس سے مایوسی بڑھی ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •