مجھے کوئی میری نظروں سے نہیں گرا سکتا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

میں نے ہر تقریر میں نوجوانوں کو میرٹ کا یقین دلایا اور پھر پنجاب کا وزیر اعلی دیا۔ صرف یہی نہیں اس بے چارے کا دفاع بھی کرتا ہوں۔ لوگ مجھے برا بھلا کہتے ہیں اور بدنام کرنے کی کوشش کرتے ہیں حالانکہ پاکستان میں ایسا پہلے دفعہ نہیں ہوا۔ ایوب خان چونکہ بہت طاقت ور صدر تھے تو لوگوں کو لگتا کہ صدر ہی سب کچھ ہوتا ہے۔ بھٹو صاحب نے چوہدری فضل الہی صاحب کو صدر بنا دیا اور پھر لوگوں نے دیکھا کہ صدر کچھ بھی نہیں ہوتا تھا۔

پھر بھٹو صاحب وزیراعظم تھے تو سب لوگوں کو لگتا ہے وزیراعظم کا عہدہ بڑا اہم ہے۔ تو ڈکٹیٹر جنرل ضیاء نے جونیجو صاحب کو وزیراعظم بنا دیا۔ وہ دن اور آج کا دن وزیراعظم کا عہدہ کبھی سنبھل نہیں پایا۔ ہم بھی شہباز شریف کی پوزیشن کے ساتھ کچھ ایسا ہی کرنا چاہتے ہیں۔ جیسا پرانے پاکستان کے وزیراعظموں کے ساتھ ہوتا تھا۔ آپ کو یاد ہو گا، جس نے بھی وزیراعظم بن کر وزیراعظم بننے کی کوشش کی منہ کی کھائی۔ اس لیے پچھلے اکتیس سالوں میں نو مرتبہ وزیراعظم کا عہدہ زبردستی خالی کروایا گیا ہے ایسا ہم نئے پاکستان کے پنجاب میں نہیں ہونے دیں گے۔ میں وزیراعظم بن کر کبھی بھی وزیراعظم بننے کی کوشش نہیں کروں گا اور وزیراعلی پنجاب کا دفاع کرتا رہوں گا۔ کٹھ پتلی ہونے کا درد کچھ خاص تو نہیں لیکن پھر بھی میں نے انہیں کٹھ پتلی کی کٹھ پتلی ہونے کے درد سے بچانا ہے۔ یہ نیا پاکستان ہے۔

پنجاب ہی میں، میں نے ”سب سے بڑے ڈاکو“ کو صوبائی اسمبلی کا سپیکر بنا دیا ہے۔ میرٹ والا نقطہ لوگ ادھر بھی اٹھاتے ہیں۔ تو میں لوگوں کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ جب میرٹ کی بات آتی ہے تو میں اور زرداری صاحب ذاتی دشمنیاں بھول جاتے ہیں۔ زرداری صاحب نے پرانے پاکستان میں جسے ڈپٹی پرائم منسٹر بنا دیا تھا ہم نے نئے پاکستان میں انہیں سپیکر بنا دیا اور میرٹ کو داتیات پر بالکل ایسے ہی ترجیح دی جیسے زرداری صاحب پرانے پاکستان میں دیا کرتے تھے۔ پی ٹی آئی کے نوجوانوں کو چاہیے کہ اگر اس سلسلے میں کوئی سوال اٹھائے تو سوچنے کی ضرورت نہیں، بس اسے پٹواری کہہ کر چپ کرا دیں۔

میں نے ریلوے کا وزیر اس شخص کو بنایا جو ”چپڑاسی“ بننے کے قابل بھی نہ تھا۔ (یہ انہی کے الفاظ ہیں میرے لیے وزیر یا چپڑاسی ہونے سے انسانی کی عزت کم یا زیادہ نہیں ہوتی۔ ہاں البتہ رعب میں فرق آ سکتا ہے جو کہ ویسے بھی ایک منفی خاصیت ہے ) ہائے اللہ اب ہر بات پر ہی شور مچانا نہ شروع کر دیں۔ وہ بیچارہ کونے میں بیٹھا دہی کھا رہا ہے تو آپ کو کیا۔

میرا مشیر خزانہ زرداری والا ہی ہے۔ زرداری نے جب خزانہ خالی کیا تھا تو اس کی مدد اور مرضی سے ہی کیا ہو گا نا۔ اس تقرری کا مقصد پرانے پاکستان کو نئے پاکستان سے جوڑے رکھنا ہے لیکن اگر معیشت کی سائنس ہماری سمجھ میں آ گئی تو اسے زرداری صاحب کو واپس کر دیں گے۔

لاہور، ملتان اور راول پنڈی کے میٹرو منصوبوں کی تعریفیں کرنے کے بعد ہم خود بھی پشاور میں وہی کام کر رہے ہیں لیکن ہم سے ہو نہیں رہا۔ منصوبے کے اخراجات اور مکمل ہونے کی تاریخ دونوں ہی ہمارے قابو میں نہیں آ رہے۔ یہ منصوبہ پرانے پاکستان سے نئے پاکستان میں داخل ہو چکا ہے لیکن میں اب پہلے جتنا پشاور جاتا نہیں اس لیے مجھے اس بارے میں کچھ زیادہ علم نہیں۔ مجھے اب لاہور میں زیادہ مزا آتا ہے۔

آئی ایم ایف کے ساتھ تو میری خود کشی جڑی ہوئی تھی لیکن اب آئی ایم ایف والے ہمیں بتاتے ہیں کہ بجلی، گیس اور دوسری ضروری اشیاء کی قیمتیں کیا ہوں گی، ڈالر کتنے کا ہو گا اور شرح سود کیا ہو گی۔ بات صرف بتانے تک ہوتی تو خیر تھی، ہم مانتے بھی ہیں۔ پرانے پاکستان میں وہ غلط بتاتے تھے جب کہ نئے پاکستان میں وہ ہماری رہنمائی بہت اچھی کر رہے ہیں۔

لوگ ٹیکس اس لیے نہیں دیتے تھے کہ پرانی حکومتیں کورپٹ تھیں۔ لیکن اس دفعہ ٹیکس پچھلے برسوں سے بھی کم اکٹھا ہوا ہے۔ ٹیکس کم اکٹھا ہونے اور ایمنیسٹی سکیم کی کامیابی کے بارے میں عثمان بزدار اور مراد سعید بہت جلد ایک اکٹھی پریس کانفرنس کریں گے۔

میں نے قاضی فائز عیسی کے خلاف ریفرنس بھیجنے کو کہا کیونکہ انہوں نے اپنی بیوی کی بیرون ملک جائیداد اپنے اثاثوں میں ظاہر نہیں کی تھی۔ بعد میں پتا چلا کہ میں نے خود بھی اپنی بیویوں کی بیرون ملک جائیدادیں اپنے اثاثوں میں ظاہر نہیں کیں کیونکہ قانون کے مطابق ایسا کر نا ضروری نہیں ہے۔ لیکن قاضی فائز عیسی کے خلاف ریفرنس پھر بھی بھیجنا ضروری تھا تاکہ صورت حال ایک پیج پر ہی رہے۔

یہ پٹواری اور لفافہ صحافی جتنی مرضی لمبی لسٹیں بنا لیں، یو ٹرن ہی بڑا لیڈر ہونے کا ثبوت ہے اور یہ مجھے میری نظروں سے گرا نہیں سکتے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سلیم ملک

سلیم ملک پاکستان میں شخصی آزادی کے راج کا خواب دیکھتا ہے۔ انوکھا لاڈلا کھیلن کو مانگے چاند۔

salim-malik has 217 posts and counting.See all posts by salim-malik