باچا خان کی زندگی امریکن سکولوں میں پڑھائی جاتی ہے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اگر آپ نے دنیا میں کہی بھی کسی بھی قوم کے مہذب ہونے کا اندازہ لگانا ہے تو سب سے پہلے یہ دیکھئے کہ اس قوم کا خواتین کے ساتھ رویہ اور سلوک کیسا ہے؟ جن لوگوں کا اپنی خواتین کے ساتھ رویہ توہین آمیز ہو وہ قومیں کبھی ترقی نہیں کرسکتیں، یہ الفاظ باچا خان بابا کے ہیں۔

سرحدی گاندی، فخر افغان اور خان عبدالغفار خان کے نام سے مشہور باچا خان بابا کی 32 ویں برسی آج منائی جارہی ہے 20 جنوری 1988 کو 97 سال کی عمر میں وفات پانے والے باچا خان بابا کی ایک ایک بات میں رہنمائی ہے شاہد اس وجہ سے آج فرسٹ ورلڈ کنٹریز میں باچا خان کی پر امن اور امن کے لئے جدوجہد سے بھر پور زندگی بچوں کو سکولوں میں پڑھائی جاتی ہے۔

ہمارے ہاں غدار کہلانے والے باچا خان کو بقول ڈاکٹر خادم حسین چیئرمین باچا خان ٹرسٹ امریکہ کے آٹھ سے زائد ریاستوں میں بچوں کو تشدد سے دور رکھنے اور امن پسند شہری بنانے کے لئے باچا خان کی زندگی پر مبنی مضامین پڑھائے جاتے ہیں۔

آج باچا خان بابا کا دن ہے ہمیں کم از کم آج کے دن باچاخانی میں کھیلنا چاہیے مطلب یہ کہ باچاخانی کی باتیں کرنی چاہیں جو انسانیت، آزادی، امن، تعلیم، بھائی چارہ، برابری کے حقوق وغیرہ کی باتیں ہیں۔ آج کے دن بابا کے بارے میں مجھ جیسا ادنی طالب علم لکھنا چاہے بھی تو کیا لکھے گا لہذا بہتر یہ ہوگا کہ بابا کے بارے میں پڑھی کچھ باتیں آپ سے شیئر کردوں۔

سچا خدائی خدمت گاراسمبلی میں صرف مخلوقِ خدا کی خدمت کے جذبے کے تحت جاتا ہے۔

ناکام ہونے کا غم انہیں لاحق ہوتا ہے جو اپنے اغراض کے لئے کام کرتے ہیں جو لوگ خدا کی راہ میں نکلتے ہیں اور خدا کے لئے کام کرتے ہیں انہیں ناکامی کا غم نہیں ہوتا۔

اس ملک پرعورتوں اورمردوں کا یکساں حق ہے۔

ہمارا فرض دنیا سے ظلم کا خاتمہ اورمظلوم کو ظالم سے نجات دلانا ہے ہم اس قوم اورحکومت کی مخالفت کریں گے جو مخلوقِ خدا پر ظلم ڈھاتی ہو چاہے ظالم ہمارا بھائی اور ہمارا ہم مذہب ہی کیوں نہ ہو۔

بابا کی پوری زندگی اس طرح کی باتوں سے عملی طور پر بھری پڑی ہے مختصر یہ کہونگا کہ باچا خان سے لاکھ اختلاف سہی لیکن زندگی میں ایک بار ضرور پڑھنا ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *