وزیر مذہبی امور نورالحق قادری پر اپنے کاروباری شراکت دار کو بے ضابطہ نیلامی سے محکمانہ جائیداد بخشنے کا الزام

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

وزارت مذہبی امور کی ملکیت ایک بڑی عمارت کی دو منزلیں وفاقی وزیر مولانا نورالحق قادری کے کاروباری ساتھی کو نیلام کر دی گئیں۔ رمنا بلڈنگ اسلام آباد کے قلب جی۔6 مرکز میں قائم ہے جہاں پہلے وزارت مذہبی امور کا دفتر قائم تھا جو اب نئے تعمیر شدہ کوہسار کمپلیکس میں منتقل ہو گیا ہے۔ جب یہ عمارت خالی ہوئی تو وزارت مذہبی امور نے رمنا بلڈنگ کی نیلامی کا فیصلہ کیا۔ عمارت میں واقع ایک بینک کی شاخ کو بھی عمارت خالی کرنے کا پیشگی نوٹس نہیں دیا گیا اور ایک ہی مرحلے میں پوری عمارت کو نیلام کرنے کے بجائے منزل بہ منزل نیلامی کا فیصلہ کیا گیا۔

نجی نیوز چینل کے مطابق اب تک دو منزلیں نیلام ہوئی ہیں اور دونوں بار کامیاب بولی دہندہ نعمان خان رہے ہیں جو وفاقی وزیر مذہبی امور نورالحق قادری کے کاروباری شراکت دار ہیں۔عمارت کی مزید دو منزلیں آئندہ نیلام کی جائیں گی جس کے لیے کسی درخواست گزار کا دلچسپی لینا مشکل دکھائی دیتا ہے۔ نیلامی کے دوران بولی کے عمل میں بھی ہیرپھیر کی گئی، ایک بولی دہندہ عزیز اللہ نے وزارت سے شکایت کی کہ اسے بولی کے عمل میں حصہ لینے نہیں دیا گیا جب کہ اس نے تمام شرائط پوری کردی تھیں۔

وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری نے کہاہے کہ وزرات مذہبی امور کی عمارت کی دو منزلیں حاصل کرنے والے شخص نعمان خان کا تعلق ان کے آبائی علاقے ضلع خیبر سے ہے اور وہ امپورٹ ایکسپورٹ کا کاروبار کرتا ہے۔ نورالحق قادری نے نعمان خان کے کاروباری شراکت دار ہونے کا اعتراف بھی کیا تاہم انہوں نے رمنا بلڈنگ کے لیے بولی میں اپنے کاروباری شراکت دار کی شرکت سے لاعلمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ نعمان خان رمنا بلڈنگ میں اپنی دکان کی شاخ قائم کرنا چاہتا تھا لیکن انہوں نے انکار کر دیا تھا۔ دوسری طرف اس دکان میں ان کی کوئی شراکت بھی نہیں ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply