فیفا نے 203 کے مقابلے میں ایک ووٹ سے پاکستان کی معطلی کی توثیق کر دی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

فیفا کانگریس نے اپنے 71 ویں اجلاس میں پاکستان فٹ بال فیڈریشن کی معطلی کے فیصلے کی توثیق کر دی۔ کانگریس میں 209 ممبر ووٹ ڈالنے کے اہل تھے جن میں سے 204 نے ووٹ ڈالا۔ قرارداد کی منظوری کے لیے حاضر ممبران کی تین چوتھائی اکثریت درکار تھی یعنی 157 ووٹ پاکستان کے خلاف پڑتے تو پاکستان معطل ہو جاتا۔ پاکستان کے خلاف 204 میں سے 203 ووٹ پڑے اور صرف ایک ووٹ اس کی حمایت میں آیا۔

پاکستان کے علاوہ چاڈ کی فٹ بال فیڈریشن کو بھی 206 کے مقابلے میں ایک ووٹ سے معطل کیا گیا۔

یاد رہے کہ 7 اپریل کو پاکستان فٹ بال فیڈریشن میں باہمی چپقلش کے باعث فیفا کی بیورو آف کونسل نے پاکستان کے خلاف بڑا اقدام اٹھاتے ہوئے اس کی رکنیت کو معطل کیا تھا۔

اس سے ایک ہفتہ قبل فیفا نے پاکستان کو وارننگ دی تھی کہ اسکی نامزد کردہ نارملائزیشن کمیٹی کے کام میں مداخلت نہ کی جائے لیکن پاکستان فٹبال فیڈریشن کے اشفاق گروپ نے فٹبال ہاؤس پر قبضہ ختم نہ کیا۔

معطلی کی وجہ سے پاکستان کو فیفا کی فنڈنگ ملنا ختم ہو گئی اور پاکستان بین الاقوامی مقابلوں میں بھی حصہ نہیں لے سکے گا۔

اس تنازعے کے باعث نیشنل ویمن فٹبال چیمپئن شپ میں ٹیموں نے اپنے میچز کھیلنے سے انکار کردیا تھا، جس کے باعث ماشا یونائیٹڈ اور ہائی لینڈرز کے درمیان سیمی فائنل منسوخ ہوا بعد ازاں ٹورنامنٹ بھی منسوخ کردیا گیا تھا۔

پاکستان میں فٹ بال فیڈریشن پر کنٹرول کا تنازع گزشتہ کئی ماہ سے چلا آ رہا ہے جس کے حل کے لیے فیفا نے نارملائزیشن کمیٹی تشکیل دی تھی۔ فیفا نے کمیٹی کو شفاف انتخابات کا مینڈیٹ دیا تھا۔

پاکستان میں فٹ بال فیڈریشن کے معاملات چلانے کی دو تنظیمیں دعوے دار ہیں جن میں ایک تنظیم اشفاق حسین جب کہ دوسری کے سربراہ نوید خان ہیں۔
اشفاق حسین گروپ کا دعویٰ ہے کہ 2018 کے انتخابات میں اُنہیں واضح کامیابی ملی تھی۔ لہذٰا 2023 تک وہی فیڈریشن چلانے کے حق دار ہیں جب کہ نوید خان اُن انتخابات کو تسلیم نہیں کرتے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *