گھر کبھی جنت نہیں بنتے کیونکہ عورت کا تو کوئی گھر ہوتا ہی نہیں

مجھے آج بھی یاد ہے، ابو کس طرح میرے نام کی تسبیح کیا کرتے تھے۔ گھر میں قدم رکھتے ہی میرا نام سنائی دینے لگتا تھا۔ جیسے کوئی چھوٹا بچا اپنی پسندیدہ چیز کی تلاش میں پاگلوں کی طرح ادھر اُدھر ہلا مچاتا پھرتا ہے۔ عید پر میرے لیے میری ہی پسند سے کپڑے لایا کرتے تھے، میں باقی بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹی تھی اور ابا کی بہت لاڈلی بھی کیونکہ ذرا حاموش طبیعت اور حساس دل کی تھی، بہن بھائی رشتہ دار سب ہمیشہ مذاق کرتے تھے میرا کیونکہ کھانے پینے کی خاصا شوقین تھی میں۔

Read more

بھوک انسان کی سب سے بڑی مجبوری

چار بجتے ہی آفس میں جیسے ہر طرف افرا تفری سی مچ جاتی ہے۔ چھٹی ہوتے ہی ہر کوئی اپنی چیزیں بھی سمیٹنے کی زحمت نہیں کرتا اور بھاگ نکلتا ہے۔ میں بھی ہر روز کی طرح سب کے ساتھ ہی چھٹی ہوتے ہی سامان سمیٹے بغیر باہر نکل گئی۔ رکشہ والا پندرہ منٹ سے…

Read more