شغلِ اعظم کی شاندار نمائش جاری ہے

اسے مملکتِ خداداد اسلامی جمہوریہ پاکستان کے نام سے چلنے والے تھیٹر کے تماشبینوں اور شائقین کی بدقسمتی کہئے یا ڈائریکٹرز، پروڈیوسرز اور ایکٹرز کی نالائقی کہ اس کے سیاسی سنیما کے سکرین پر روزِ اول سے ہی جو فلم چلائی چلائی جارہی ہے، اس کی سکرپٹ ستر سال بعد اور ملک میں تبدیلی آنے کے بعد بھی تبدیل نہیں ہوئی۔ جو کام، طریقہ، ہتھکنڈے اور سکرپٹ پچھلی حکومتیں اور ادارے مل کر سیاسی پارٹیوں، قائدین اور اپنے ناقدین پر آزمایا کرتے تھے، وہی موجودہ ہدایتکار اور اداکار اپنے سیاسی مخالفین پر بھی آزما رہے ہیں۔

Read more