تبدیلی آگئی مگر۔۔۔

تبدیلی آگئی ہے اور الیکشن کے ابتدائی نتائج آتے ہی آ گئی۔ سب سے بڑی تبدیلی پی ٹی آئی اور مسلم لیگ (ن) کے ہاں واقع ہوئی۔ گزشتہ پانچ سال پی ٹی آئی، دھاندلی دھاندلی کا شور مچاتی رہی تو مسلم لیگ (ن) اصرار کرتی رہی کہ انتخابات صاف اور شفاف منعقد ہوئے، اب مسلم…

Read more

ملک کو درپیش چینلجز اور انتخابی نتائج۔ جنگ میں نہ چھپ سکنے والا کالم

24 جولائی کو لکھے اور 25 جولائی (انتخابات والے دن) روزنامہ جنگ میں ”انتخابات کے ممکنہ نتائج ‘‘ کے زیرعنوان شائع ہونے والے کالم کا اختتام ان الفاظ کے ساتھ کیا گیا تھا کہ: ” میری صحافتی زندگی میں یہ پہلا الیکشن ہے کہ جس کی شفافیت سے متعلق ایک نہیں، دو نہیں، تین نہیں…

Read more

انتخابات جو میں نے دیکھے

بطور اخبارنویس نصف درجن سے زائد انتخابات دیکھے اور رپورٹ کئے، حتیٰ کہ جنرل پرویز مشرف کے ریفرنڈم کی بھی رپورٹنگ کی لیکن 25 جولائی کو ہونے والا الیکشن ہر لحاظ سے اپنی مثال آپ تھا۔ یہ واحد الیکشن تھا کہ جس میں بطور اخبار نویس مجھے ذرہ بھر محنت نہیں کرنی پڑی۔ ماضی کے…

Read more

انتخابات کے ممکنہ نتائج

2013 کے انتخابات کے موقع پر چیف الیکشن کمشنر فخرالدین جی ابراہیم تھے جن پر تینوں بڑی جماعتیں بشمول پی ٹی آئی کو اعتماد تھا لیکن اب کی بار کا الیکشن کمیشن متنازع ہے۔ چند ماہ قبل تک عمران خان صاحب اس کو برابھلا کہتے رہے اور اب مسلم لیگ(ن) ہی نہیں بلکہ پیپلز پارٹی…

Read more

عابد باکسر، رائو انوار، عمران خان، اسد عمر اور خرم نواز: کاش مجھے قانون کی سمجھ ہوتی

ہفتہ کو شائع ہونے والا کالم جمعہ کو دوپہر سے قبل لکھ کر ایڈیٹر کو ارسال کرنا پڑتا ہے۔ کبھی کبھی جمعرات اور جمعہ کی درمیانی رات بھی لکھ لیتا ہوں۔ آج صبح ساڑھے گیارہ بجے لکھنے بیٹھ گیا۔ انتخابات کے ممکنہ نتائج سے متعلق کالم تقریباً مکمل کرچکا تھا کہ سامنے لگے ٹی وی…

Read more

میری ماں کو کس نے رلایا؟

مجھے یہ اعتراف کرنے میں کوئی تامل نہیں کہ میاں نوازشریف بطور لیڈر اور مسلم لیگ بطور جماعت کبھی میرے فیورٹ نہیں رہے۔ میں نے یا میرے خاندان کے کسی فرد نے کبھی مسلم لیگ (ن ) کو ووٹ نہیں ڈالا۔ انسانی نظریات کی تشکیل میں اس کے ماحول اور پس منظر کا بنیادی کردار…

Read more

نواز شریف اور شہباز شریف

بطور صحافی یہ مشاہدہ رہا ہے کہ سیاسی لیڈروں کو عموماً ان پڑھ اور حلقے کی سیاست کرنے والے لیڈر نہیں، بلکہ پڑھے لکھے وہ مشیر غلط راستے پر لگاتے ہیں، جو دن رات ان کے آگے پیچھے یا پھر خلوتوں میں ساتھ ہوتے ہیں۔ یہ مشیر عموماً سیاست دان نہیں بلکہ ٹیکنوکریٹس، بیوروکریٹس، دانشور…

Read more

سفید گھوڑا ہی آگے

بنیادی طور وہ صوفی ہیں لیکن وہ صوفی نہیں جو مناصب کے حصول کی امید میں قبروں پر سجدے کرتے ہیں۔ بیوروکریسی کے اعلیٰ ترین مناصب پر فائز رہ کر بھی وہ چلنے ، پھرنے اور ملنے ملانے میں ایک عام انسان دکھتے ہیں۔ غرور اور تکبر ان کے قریب سے بھی نہیں گزرے ۔…

Read more

نظام انصاف۔ چند مودبانہ سوالات

قانون کا علم رکھتا ہوں اور نہ اس کی موشگافیوں سے واقف ہوں۔ بطور صحافی عدالتی کارروائیاں بہت دیکھ چکا ہوں لیکن اللہ کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ کبھی کسی عدالت میں بطور ملزم پیش نہیں ہوا۔ نزاکتوں کو سمجھ نہیں سکتا ، اس لئے قانونی معاملات پر تبصرہ آرائی سے کنارہ ہی کرتا…

Read more

پی ٹی آئی۔ اندر کا کھیل

پشتو کا ایک مقولہ ہے کہ نادیدہ والدین کے گھر بچے کی پیدائش ہوئی تو چوم چوم کر اسے مار دیا گیا۔ ابھی انتخابات ہوئے ہیں اور نہ اکثریت ملی ہے لیکن پی ٹی آئی کے اندر وزارت اعلیٰ سے لے کر وزارت عظمیٰ تک کے لئے لڑائیاں زورپکڑگئی ہیں۔ خیبر پختونخوا میں پرویز خٹک…

Read more