بینک الفلاح نے سوشل میڈیا پر صحافیوں کو گالیاں دینے والے تحریک انصاف کے حامی اہل کار کو نوکری سے نکال دیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سوشل میڈیا پر صحافیوں کو گالیاں دینے والے بینک الفلاح کے ملازم کو سینئر صحافی کی شکایت پر نوکری سے برخاست کر دیا گیا ہے۔

سینئر صحافی حسن زیدی نے عمران خان کے آدھی رات کو قوم سے خطاب پر تبصرہ کیا تو فضیل تجمل نامی پی ٹی آئی کے کارکن نے ان کے خلاف انتہائی نازیبا زبان کا استعمال کیا۔

صحافی نے اس کے ٹویٹ کا سکرین شارٹ لے کر بینک الفلاح کو ٹیگ کردیا اور اس کے نامناسب رویے کی شکایت کی۔ حسن زیدی نے سوال اٹھایا کہ کیا بینک الفلاح میں ملازمت کیلئے اس لیول تک گرنا پڑتا ہے؟۔

حسن زیدی نے صرف اسی پر بس نہیں کی بلکہ فضیل تجمل کے باقی صحافیوں کو کیے گئے نازیبا کمنٹس کے سکرین شارٹ لے کر بھی پوسٹ کیے ۔

صحافی کی جانب سے شکایت پر بینک الفلاح نے فوری ایکشن لیتے ہوئے اپنے ملازم کو نوکری سے برخاست کردیا۔ بینک الفلاح نے ایک وضاحتی بیان میں یہ بھی واضح کیا کہ فضیل تجمل کی جانب سے اپنایا جانے والا رویہ ان کی ذاتی رائے تھی جس کا بینک کی پالیسی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔

فضیل تجمل کو نوکری سے نکالے جانے کے بعد معاملہ ختم نہیں ہوا بلکہ تحریک انصاف کے سوشل میڈیا پر سرگرم کارکنوں نے بینک الفلاح کے خلاف ٹوئٹر پر مہم شروع کردی۔ پی ٹی آئی کارکن سوشل میڈیا پر ایک شخص کے ریمارکس کو بنیاد بنا کر اسے نوکری سے نکالے جانے پر اعتراض اٹھا رہے ہیں۔ پی ٹی آئی کا ’#BoycottBankAlfalah‘ ہیش ٹیگ ٹوئٹر پر ٹاپ ٹرینڈ کر رہا ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •