قطر کی جانب سے پاکستان کو امداد: قطر نے 3 بلین قطری ریال جبکہ ڈاکٹر حفیظ شیخ نے 3 ارب ڈالر کا بیان جاری کیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

قطر کی جانب سے ملنے والی امداد پر قطر کی ایجنسی اور مشیر خزانہ پاکستان ڈاکٹر حفیظ شیخ کے متضاد بیانات سامنے آ گئے۔ تفصیلات کے مطابق قطر کی ایجنسی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ امیرقطر شیخ تمیم بن حمدالثانی کی ہدایت پر نائب وزیر اعظم شیخ محمدبن عبدالرحمان نے اعلان کیا ہے کہ قطر پاکستان میں 3 ارب قطری ریال کی براہ راست سرمایہ کاری کرے گا۔

حکومتی اعلامیہ میں قطری نائب وزیراعظم نے کہا کہ 3 ارب قطری ریال کی سرمایہ کاری کے بعد پاک قطر باہمی معاشی تعاون کا حجم 9 ارب ڈالر ہو گا۔ پاکستان سے دیگرشعبوں میں بھی تعاون بڑھانے کے خواہاں ہیں۔

دوسری طرف مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر مشیر خزانہ پاکستان ڈاکٹر عبد الحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ قطر کی طرف سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں مزید بہتری کا عزم دہرانے پر بھی شیخ تمیم بن حمد الثانی کے مشکور ہیں۔ مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ نے اس اعلان پر امیر قطر کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ میں امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی کی جانب سے پاکستان کو 3 ارب ڈالرز کی امداد فراہم کرنے پر شکرگزار ہوں۔

قطر کی نیوز ایجنسی اور مشیر خزانہ پاکستان ڈاکٹر عبد الحفیظ شیخ کے اعلانات میں تضاد کی وجہ سے کنفیوژن پیدا ہو گئی ہے کیونکہ تین ارب ڈالر اور تین ارب قطری ریال میں کافی زیادہ فرق ہے۔ تین ارب قطری ریال کی مالیت صرف 0.8 ارب ڈالر بنتی ہے۔ ٹویٹر پر موجود صارفین نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت اس طرح کے معاملات میں احتیاط برتے اور قطر کی جانب سے ملنے والی امداد سے متعلق وضاحت بھی کرے کہ آیا قطر سے ملنے والی امداد قطری ریال ہیں یا پھر امریکی ڈالر۔

 

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •