وزیراعظم عمران خان ڈپریشن کا شکار ہونا شروع ہوگئے ہیں: سینئر تجزیہ کاروں میں اتفاق

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سینئر صحافی ارشد شریف نے کہا ہے کہ وزیراعظم ڈپریشن کا شکار ہونا شروع ہوگئے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان حکومتی کارکردگی اور عوام سے کیے وعدوں کے بارے میں پریشان ہیں۔ اب عوام بھی کہہ رہے ہیں کہ یہ وعدے سبز باغ تھے۔ ہارون الرشید نے اپنے کالم میں لکھا کہ وزیراعظم ڈپریشن کا شکار ہونا شروع ہوگئے ہیں۔

سینئر تجزیہ کار ارشد شریف نے رؤف کلاسرا کے ہمراہ سینئر اینکر محمد مالک کے پروگرام میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ چیف جسٹس سپریم کورٹ نے کہا کہ احتسابی عمل سے سیاسی انجینئرنگ کا تاثر سامنے آرہا ہے جو ملک کیلئے انتہائی خطرناک ہے۔

مالم جبہ کیس میں پرویز خٹک اور اعظم خان  سمیت سب کو کلین چٹ مل جائے گی۔ نیب نے شفاف تحقیقات کی ہوں گی۔ اپوزیشن میں گرفتاریاں ہوتی ہیں لیکن حکومت کے ارکان کی گرفتاری نہیں ہو سکتی۔

ارشد شریف نے کہا کہ برٹش نیشنل زلفی بخاری کے خلاف آج سے سوا سال قبل تحقیقات شروع ہوئی تھیں لیکن اب نیب پر کیس بند کرنے کیلئے دباؤ ڈالا جارہا ہے۔ میں نے نیب سے پوچھا کہ آپ پر کوئی دباؤ ڈالا جارہا ہے؟ نیب نے کہا کہ ہم پر کوئی پریشر نہیں ہے۔ اب پتا نہیں یہ کیس کس کے ساتھ لنک ہے۔

اس موقع پر سینئرتجزیہ کار رؤف کلاسرا نے کہا کہ عمران خان ڈونر فرینڈلی حکومت چلا رہے ہیں۔  یہ وہ ڈونر ہیں جو ماضی میں عمران خان کے ساتھ رہے ہیں۔ رؤف کلاسرا نے کہا کہ علی زیدی کو ہی لے لیں۔ جس دوست کے گھر میں رہتے ہیں، اس کو چین ساتھ لے کرجاتے ہیں۔

محمد مالک نے یہ سارے لوگ تو مشرف کے دور حکومت میں بھی موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں وزیراعظم عمران خان سے بہت امیدیں ہیں۔  ان کی ایمانداری پر کوئی شک نہیں لیکن اگر انہوں نے مفادات رکھنے والے لوگوں کو نہ ہٹایا تو ملک وقوم کی تباہی کے ساتھ ان کی سیاست بھی تباہ ہو جائے گی

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •