عوام کٹھ پتلی اور سلیکٹڈ وزیر اعظم سے آزادی چاہتے ہیں: بلاول بھٹو

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عوام سلیکٹڈ وزیر اعظم کوماننے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ اس ملک کے عوام کسی کٹھ پتلی کے آگے سر جھکانے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ آزادی مارچ کے شرکاءکی جدوجہد کامیاب ہوگی۔ اسلام آباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ میں پیپلز پارٹی کی نمائندگی کرتے ہوئے آزادی مارچ کے تمام شرکاءکو سلام پیش کرتا ہوں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ عوام سلیکٹڈ وزیر اعظم کوماننے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ اس ملک کے عوام کسی کٹھ پتلی کے آگے سر جھکانے کے لئے تیار نہیں ہیں۔  انہوں نے کہا کہ آزادی مارچ متفقہ طور پر حکومت کو گھر جانے کا پیغام دے رہا ہے۔ اس ملک کے بہادر اور غیرت مند عوام آج بھی کسی سلیکٹڈ وزیر اعظم کو ماننے کے لئے تیار ہیں اور نہ عوام کسی کٹھ پتلی کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی آمر کے سامنے اپنا سرجھکانے کو تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس ملک کے عوام جمہوریت چاہتے ہیں اور ان کٹھ پتلیوں سے آزادی چاہتے ہیں۔

شہید ذوالفقار علی بھٹونے کسی آمر کے سامنے جھکنے کی بجائے اپنا سرکٹا لیا تھا۔ ہم چاہتے ہیں کہ اس ملک میں طاقت کا سرچشمہ عوام ہوں۔ ہماری قیادت جمہوریت کا پرچم تھام کر دو ڈکٹیٹروں کے ساتھ ٹکرائی تھی۔ آج آپ کے اور ہمارے جمہوری حقوق چھینے جا رہے ہیں۔ الیکشن میں سلیکشن کرا کے دھاندلی کروا دی جاتی ہے۔  انہوں نے کہا کہ کٹھ پتلی وزیر اعظم معیشت پر حملہ کرتا آ رہا ہے۔ جب سے عمران خان کی حکومت آئی ہے۔ عوام کا معاشی قتل کیا جا رہا ہے۔ کٹھ پتلی حکومتیں کسی اور کے ووٹ سے اقتدار میں آتی ہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ اس ملک کی جمہوریت، وفاق اورمعیشت پر حملہ کیا گیا ہے۔ کٹھ پتلی حکومتیں عوام کا خیال نہیں رکھتیں۔ پینشنز میں اضافہ نہ کر کے بزرگوں کا معاشی قتل کیا جا رہا ہے ۔ ملک میں ٹیکسوں کا بوجھ اور مہنگائی کا طوفان کھڑا کر دیا گیا ہے۔ عام آدمی، تاجروں،  کسانوں اور دیگر طبقات کا معاشی قتل کیاجا رہا ہے ۔ بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ٹیکسز کی وجہ سے تاجروں کا معاشی قتل ہورہا ہے۔ اس ملک میں اب وقت آ گیا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کو جانا پڑے گا اورعوام کا نعرہ ہے کہ گو سلیکٹڈ گو۔ میں آزادی مارچ کے شرکا اور قائدین کا شکر گزار ہوں۔  آپ کی جدوجہد کامیاب ہو گی اور سلیکٹڈ وزیر اعظم کو گھر جانا پڑے گا۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •