’کیا آپ نے ابھی ابھی بچے کو جنم دیا‘: دوحہ ایئرپورٹ پر ’خواتین کا تفصیلی معائنہ‘

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

قطر
Reuters
آسٹریلیا نے قطر ایئرویز کی دوحہ سے سڈنی جانے والی پرواز میں سوار ہونے سے قبل خواتین کے ’اندرونی طبی معائنے‘ کرنے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق یہ طبی معائنے اس وقت کیے گئے جب حماد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی ایک لیٹرین میں ایک نوزائیدہ بچے کی موجودگی کا علم ہوا۔

بچے کے شناخت تاحال نہیں کی جا سکی۔ طبی معائنے سے گزرنے والی خواتین میں 13 آسٹریلوی خواتین بھی شامل تھیں۔

آسٹریلیا کے چینل سیون کے مطابق ان خواتین کو ایئرپورٹ پر ہی ایک ایمبولینس میں لے جایا گیا جہاں انھیں زیرِ جامہ اتارنے کا کہا گیا جس کے بعد ان کا معائنہ کیا گیا۔

ان خواتین کو یہ نہیں بتایا گیا کہ ان کا دو اکتوبر کو قطر ایئرویز کی پرواز پر بیٹھنے سے قبل کیوں معائنہ کیا جا رہا ہے۔

آسٹریلیا کی حکومت نے اس حوالے سے قطری حکام سے رابطہ کیا ہے۔

آسٹریلیا کے محمکہ خارجہ اور تجارت کے ترجمان نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ ‘ہم نے باضابطہ طور پر اس واقعے سے متعلق اپنے تحفظات قطری حکام کے سامنے ریکارڈ کروائے ہیں اور ہمیں اس بارے میں یقین دہانی کروائی گئی ہے کہ تفصیلی اور درست معلومات ہم تک پہنچائی جائیں گی۔’

نیو ساؤتھ ویلز پولیس کے ترجمان جو سڈنی آنے والوں کے لیے قرنطینہ مراکز کی نگرانی بھی کرتے ہیں کا کہنا ہے کہ ‘ان خواتین نے نیو ساؤتھ ویلز میں قرنطینہ میں کچھ وقت گزارا اور اس دوران انھیں طبی اور ذہنی مسائل سے نمٹنے کے لیے بھی مدد فراہم کی گئی۔’

قطر ایئرویز نے تاحال اس بارے میں کوئی بیان جاری نہیں کیا۔

تاہم حماد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ‘ہمارے طبی عملے نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ ایئرپورٹ پر ایک ایسی ماں موجود ہو سکتی ہے جو حال ہی میں بچے کی پیدائش کے عمل سے گزری ہو اور اسے فوری طبی مدد کی ضرورت ہو، اس لیے یہاں سے جانے سے قبل ان کی شناخت کر لی جائے۔ انھوں نے کہا کہ ایئرپورٹ ماں سے متعلق معلومات حاصل کر رہا ہے جبکہ بچے کی دیکھ بھال طبی عملہ اور سوشل ورکر کر رہے ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 16691 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp