اسلام آباد میں سونگھنے والا نشہ چل رہا ہے: مفتی قوی کی حریم شاہ کے ساتھ ایک اور ویڈیو وائرل

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

گزشتہ روز حریم شاہ کی جانب سے مفتی قوی کو تھپڑ مارنے کی ویڈیو وائرل ہوئی۔ آج مفتی عبدالقوی کے ساتھ حریم شاہ اور عائشہ کی ایک اور ویڈیو سوشل میڈیا پر ’وائرل‘ ہو رہی ہے جس میں نشہ آور مشروبات میں سے اپنے پسندیدہ مشروب کے بارے میں فخریہ انداز میں بتایا جا رہا ہے۔ ویڈیو کا آغاز کراچی کے ”فرینچ ہاکس بے“ بیچ کے ذکر سے ہوتا ہے جس پر عائشہ ان سے پوچھتی ہیں کہ وہاں پارٹی میں کون کونسے مشروبات ہوں گے۔ مفتی جواب دیتے ہیں کہ کم از کم پانچ اقسام کے مشروبات ہوں گے۔ مجھے نام تو نہیں آتے لیکن سبز رنگ کے ہوتے ہیں، فرانس والی ہوتی ہے۔

اس دوران حریم شاہ مفتی قوی سے پوچھتی ہیں کہ آپ کو کونسا مشروب پسند ہے جس پر مفتی قوی دبے لفظوں میں جواب دیتے ہیں کہ ”میں سرخ رنگ والی پیتا ہوں، یہ میرے دل کیلئے اچھی ہے اس لیے پیتا ہوں“۔  (غالباً ’ریڈ وائن‘ کی طرف اشارہ ہے)۔

عائشہ مفتی قوی سے پوچھتی ہے کہ ابھی ہم آپس میں بیٹھے ہیں تو بتائیے کہ پارٹی میں آپ کی خواتین سہیلیاں آ رہی ہیں؟ جس پر مفتی قوی جواب دیتے ہیں کہ ” مفتی عبدالقوی کے کورم میں بیٹھنا خواتین کی خواہش ہے ۔

حریم شاہ نے ویڈیو میں مفتی عبدالقوی سے پوچھا کہ آپ نے شراب کے علاوہ کون کون سے نشے کیے ہیں؟ جس پر مفتی عبدالقوی نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ”اسلام آباد میں آج کل سب سے زیادہ جو نشہ ہو رہا ہے وہ یہ والا ہے۔“ مفتی عبدالقوی نے اپنے ناک پر انگلی رکھی اور سونگھ کر دکھاتے ہوئے اشارہ دیا جس پر حریم شاہ نے کہا کہ ” اچھا آپ کوک کا نشہ کرتے ہیں“ (کوک کا مطلب ہے کوکین)۔

حریم شاہ کی بات سن کر مفتی قوی بولے کہ نہیں نہیں میں وہ نشہ نہیں کرتا ہوں۔ مفتی قوی نے عائشہ کے قریب ہوتے ہوئے سرگوشی میں کہا کہ میرے بریف کیس میں اس وقت بھی ”چرس“ کے کم از کم پانچ سگریٹ پڑے ہوں گے۔ حریم شاہ نے پوچھا کہ آپ نے کتنی دفعہ چرس پی ہے؟ مفتی عبدالقوی نے اچانک دفاعی پوزیشن سنبھالی اور صاف مکرتے ہوئے جواب دیا کہ ”نہیں میں چرس نہیں پیتا، میں شراب بھی نہیں پیتا۔“

مفتی قوی صاف انکاری ہو گئے تو دونوں خواتین کی جانب سے اصرار کیا گیا کہ ہم آپس میں بیٹھے ہیں، ہمیں درست بات بتائیں جس پر مفتی قوی نے کہا کہ یہ باتیں باہر نہیں جائیں گی۔ عائشہ نے جواب دیا کہ نہیں یہ باتیں ہمارے درمیان سے باہر نہیں جائیں گی۔ مفتی عبدالقوی نے احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے جواب دیا کہ ”میں نے کبھی بھی مشروب کا نام نہیں پوچھا، صرف مشروب مغرب ہی پیتا ہوں“۔ حریم شاہ نے مفتی قوی سے پوچھا کہ ہم آپ کی پارٹی میں آ سکتے ہیں؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہ آپ دوست ہیں تو کیوں نہیں آ سکتی ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •