زرعی پیداوار کی کمی


ضلع دیامر تحصیل تانگیر میں زرعی پیداوار میں کمی۔ زرعی پیداوار میں کمی کی وجہ سے علاقہ مکین مالی بحران کے شکار لیکن علاقہ مکینوں کا زیادہ تر رجحان مکئی اور گندم کی کاشت کاری پر مرکوز ہے۔ علاقے میں نہ تو پانی کی کمی ہے اور نہ ہی زمینوں کی کمی اگر کمی ہے تو صرف اور صرف پھلدار درختوں کی۔

اگر مقامی لوگوں نے درخت لگاؤ مہم کا آغاز کیا تو علاقہ مکینوں کے لیے خوش آئند بات ثابت ہو سکتی ہے۔ جس میں مختلف قسم کے نایاب درختوں کی پیداوار با آ سانی ممکن ہے یعنی چیری، بادام، سیب، اخروٹ، خوبانی، ناشپاتی، آنگور، آڑو، وغیرہ لیکن بدقسمتی سے مقامی لوگ فصلوں پر زیادہ توجہ نہیں دیتے ہیں جس مالی نقصان ہوتا ہے کیونکہ جس جگہ پر مکئی کی پیداوار دس من ہوتی ہے وہاں پینتالیس سے پچاس درخت باآسانی لگائے جا سکتے ہیں۔ اور اس سے غربت کا خاتمہ ممکن ہے اور خوشحالی کا دور شروع ہو سکتا ہے۔

محکمہ زراعت شہریوں کو تفصیلی معلومات فراہم کرنے سے قاصر ہے۔ حکومت کی توجہ نہ ہونے کی وجہ سے علاقہ غربت کا شکار ہے۔ اگر حکومت نے زرعی پیداوار پر توجہ دی تو علاقے کی تقدیر بدل سکتی ہے۔

جس طرح ٫جی بی، کے مختلف اضلاع میں ایگریکلچر پے کام ہو رہا ہے اسی طرح ضلع دیامر کے تحصیلوں میں بھی کام کیا جائے تو علاقے کے لیے خوش آئند عمل ثابت ہو سکتا ہے۔

یہاں کے مقامی لوگوں کی زیادہ توجہ فصلوں پر مرکوز ہے یعنی مکئی اور گندم لیکن اس سے ان کو کوئی خاص فائدہ حاصل نہیں ہوتا بلکہ اس کے جگہ میں ایگریکلچر پر کام کیا جائے علاقے کے لیے بہترین اقدام ہوگا۔

اگر ایگریکلچر پر زیادہ توجہ دیا تو علاقے میں بیروزگاری کا خاتمہ باآسانی ممکن ہے۔ اور اس علاقے میں زیادہ تر پھلدار درختوں کی شجر کاری کی جاسکتی ہے۔ اور یہاں کے پھولوں کا ذائقہ بہت عمدہ ہو گا کیونکہ سرد موسم اور برفباری کے وجہ سے اور پانی بھی وسیع پیمانے پر موجود ہے۔

 

شاہ امیر حمزہ
Latest posts by شاہ امیر حمزہ (see all)

Facebook Comments - Accept Cookies to Enable FB Comments (See Footer).

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments (Email address is not required)
Inline Feedbacks
View all comments