امریکہ ایران کشیدگی میں اقوام متحدہ پر اٹھتے سوالیہ نشان

جنگ عظیم اول ( 1914۔ 1918 ) کی ہولناک تباہی لیگ آف نیشنز کے قیام پر جا کر منتج ہوئی جس کا مقصداقوام عالم کے درمیان ڈائیلاگ کے لئے ایسے اقدامات کرنا تھا کہ جن کے ذریعہ آئندہ ایسی ہولناک تباہی سے بچا جا سکے۔ لیگ کی 26 سالہ تاریخ طاقت کے سرچشموں کی ناجائز…

Read more

طیب حسین کو کون اکساتا ہے؟

بہاولپور میں ایک طالبعلم خطیب حسین کے ہاتھوں پروفیسر خالد حمید کے بہیمانہ قتل کے بعد بعض میڈیا رپورٹس میں یہ بات آئی ہے کہ تفتیش کی جا رہی ہے کہ خطیب حسین کو اس بہیمانہ قتل پر کس نے اکسایا؟ آئیے اس حوالہ سے چند ممکنہ محرکات کا جائزہ لیتے ہیں۔ کوئی فرد یا…

Read more

کیا جنگ ابھینندن کی ہار اور حسن صدیقی کی جیت ہے

جنگ کسی ابھی نندن کی ہار اورکسی حسن صدیقی کی جیت کا نام نہیں بلکہ جنگ انسانیت کی ہار کا دوسرا کا نام ہے کیونکہ جہاں جنگ جیتتی ہے وہاں انسانیت ہار جاتی ہے۔ جنگ میں ایک طرف جہاں سینوں پر جرات، بہادری اور شجاعت کے تمغے سجھائے جاتے ہیں وہاں دوسری طرف انسانیت لہو لہو ہوتی ہے اورانسانیت کے ناحق خون کی صفِ ماتم بچھتی ہے۔ فرشتوں نے تخلیق انسان پر اسی لئے اعتراض کیا تھا کہ یہ ناحق ایک دوسرے کے خون کو مباح ٹھہرائے گا تو خالق انسان نے ان کے اس خدشہ کو یہ کہتے رد کر دیا تھا کہ وہ انسان کی ایسی خصوصیات کے بارے میں جانتا ہے جو فرشتے نہیں جانتے چنانچہ خالق انسان کے مدنظر وہ انسانیت تھی جو انبیاء اور اوتاروں کی شکل میں دنیا میں آئی جس نے انسانیت کے ساتھ سچی ہمدری اور خیر خواہی کا درس دیا۔ انسانوں میں سے ہی ایسے انسان پیدا ہوئے جن کا اوڑھنا بچھونا بس انسانیت ہی انسانیت تھا چنانچہ ایدھی، رتھ فاؤ اور مدر ٹریسا وغیرہ اس کی چند مثالیں ہیں۔

Read more

انفارمیشن اڈیکشن اور معاشرے کا سطحی پن

انسان ہمیشہ ہی سے انفارمیشن دینے اور لینے کا رسیا رہا ہے۔ انفارمیشن کے اس عمل کی تاریخ اتنی ہی پرانی ہے جتنا کہ انسان خود پرانا ہے۔ ہزاروں سال قبل پتھروں پر کندہ تصویری زبان انفارمیشن کے ہی اس عمل کی ایک مثال ہے۔ انفارمیشن کا یہ عمل اس وقت ہزار چند ہوگیاجب سے انسان نے قلم کے ذریعہ لکھنا سیکھ لیا اور پھر قلم کے ذریعہ علم کا حصول کتاب کی اشاعت پر جا کر منتج ہوا۔ گزشتہ دوصدیاں قبل انسان نے انفارمیشن کے اس عمل کے لئے خلا کا استعمال شروع کر دیا اور ٹیلی گرافی، ریڈیو، اور ٹیلی ویژن وغیرہ جیسی ایجادات سے انسانی معاشرہ کی شناسائی ہوئی۔

Read more