سدا بہار جمہوریت

دنیا میں جتنے بھی ریاستی ماڈلز اور حکومتی نظام قائم کیے گئے ہیں، جتنی بھی تھیوریز متعارف کروائی گئی ان سب کا تعلق براہ راست عوام سے ہوتا ہے۔ ایک ریاستی نظام کے جوڑ توڑ، اونچ نیچ یا کوئی بھی معاملات ہوں وہ سب کے سب ریاستی مفاد اور تحفظ کے لئے ہوتے اور ریاست صرف اور صرف عوام کے لئے ہوتی۔ اس نظریے سے جمہوری نظام قابلِ تعریف ہے۔ لیکن عوامی فلاح و بہبود، خوشحالی، امن وسکون اور تحفظ لے لئے چین اور سعودی عرب کا ماڈل بھی اب تک مؤثر ہے۔

Read more

امن ضروری ہے!

موجودہ دنیائے عیسائیت میں پوپ فرانسس کا ایک اہم مقام ہے۔ امریکی ریاست ارجنٹا ئن کے دارالحکومت بوئنس ائیر میں 1936 میں پیدا ہوئے۔ زندگی کا بیشتر حصہ عیسائی مذہب کے اہم فرائضِ منصبی پر گزارا۔ ارجنٹائن کے صوبائی چرچ کے بطور نگران ذمہ داری بھی سنبھالی رکھی۔ اب ایک یورپی ملک ویٹی کِن سٹی ( جو کہ فقط 1000 آبادی پر مشتمل ہے ) کے مقتدر اعلی اور دنیا میں کیتھولک عیسائیت کے معتبر پادری ہیں۔ عیسائیت کو آپس میں جوڑے رکھنے اور امن و تعاون کے ساتھ رہنے کے متعلق احکامات جاری کرتے رہتے۔ان کے مذہبی اعتبار سے جاری کردہ بیان کو مسیحی برادری کی اکثریت حرفِ آخر سمجھتی ہے۔

Read more

مقامِ عورت اور معاشرتی معیار

حالیہ دنوں لاہور میں ایک نہایت ہی دل سوز واقعہ رونما ہوا۔ ایک اوربنتِ حوا کی تذلیل کی گئی، سر کے بال کاٹے گئے ظلم و تشددسے دو چار کیا گیا۔ واقعہ کا پس منظر جو بھی ہے لیکن ظلم کس طرح اور کس ذات پہ ہوا یہ قابلِ فکر ہے۔ کیا ہمارے معاشرے میں عورت کو اسی طرح کم تر اور حقیر سمجھا جاتا رہے گا؟ اسی طرح اپنا غلام سمجھ کر سلوک کیا جاتارہے گا؟ کیا اسی طرح حوس کا شکار اور درندگی کا نشانہ بنایا جاتا رہے گا؟

Read more