چرسی ڈاکٹر

”ڈاکٹر صاحب! ڈاکٹر صاحب! میری تھوڑی سی۔ “

میں روز ہسپتال پیدل جاتا ہوں۔ قریب ہی ہے۔ بڑی سڑک پار کر کے، سامنے پرانی گلی میں دائیں طرف موڑ کر، چوک سے گزر کر ہسپتال پہنچ جاتا ہوں۔ کئی مہینوں سے میں اسی ایک راستے سے گزرتا ہوں تو گلی میں ایک بڑے بالوں، عجیب سا ڈراؤنی شکل، کمزور، گندے کپڑوں میں ملبوس ایک شخص، جس کی عمر کوئی تیس بتیس سال ہوگی اس کے ساتھ ایک کتا، سگریٹ کی کچھ ڈبیا اور سیمنٹ کی کچھ خالی بوریاں ہوتی جن کو شاید وہ رات کے وقت سونے کے لیے استعمال کرتا تھا۔

Read more

دل اور دماغ کی جنگ

خاموشی قبرستانوں میں ہی اچھی لگتی ہے۔ زندہ انسانوں کو کچھ نا کچھ بولتے رہنا چاہیے۔ اتنی خاموشی اچھی نہیں لگتی۔ زندہ انسانوں کو زیبا نہیں خاموشی، ناراضگی، بعض، حسد، کینہ۔ سمجھ نہیں آ رہی کہ ماضی کی یادوں سے شروع کروں یا حال کا رونا روؤں، مستقبل کی تو خیر بات ہی نہیں کرتا۔…

Read more

دل اور دماغ کی جنگ۔

خاموشی قبرستانوں میں ہی اچھی لگتی ہے۔ زندہ انسانوں کو کچھ نا کچھ بولتے رہنا چاہیے۔ اتنی خاموشی اچھی نہیں لگتی۔ زندہ انسانوں کو زیبا نہیں خاموشی، ناراضگی، بعض، حسد، کینہ۔ سمجھ نہیں ارہی کہ ماضی کی یادوں سے شروع کروں یا حال کا رونا روؤن، مستقبل کی تو خیر بات ہی نہیں کرتا۔ کیا…

Read more

مجھے ڈاکٹروں سے نفرت ہے

میڈم آمنہ آپ کی بات اپنی جگہ پہ ٹھیک ہے لیکن۔ ۔ ۔ ”سائرہ میری بات سنو۔ آپ اتنی ضد کیوں کر رہی ہو۔ آپ کو اللہ کا شکر ادا کرنا چاہیے کہ آپ کے بھائی نے امتحان میں کامیابی حاصل کی اور اب آپ اس کو ڈاکٹر نہیں بنانا چاہتی۔ اس کو ڈاکٹر ہی…

Read more

لالہ شنکر پرساد اور مولوی

مسجد کے دروازے سے نکل کر  ہمارے گاؤں کے بازار میں سب سے پہلے دکان  شنکر پرساد کی ہے۔ بچپن میں مولانا صاحب سے پٹی پڑھنے مسجد جاتے تھے تو واپسی پر لالہ جی کی دکان سے ایک روپیہ کے پاپڑ اور ایک چورن ضرور لیتے تھے۔ جب بھی ہم لالہ کی دکان پر جاتے…

Read more