مانسہرہ میں خواجہ سرا کو گھر میں گھس کر قتل کر دیا گیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

مانسہرہ شہر کے علاقے ناڑی محلہ میں نامعلوم افراد نے خواجہ سرا کو گھر میں گھس کر قتل کردیا۔ ایبٹ آباد کا رہائشی خواجہ سرا فرحان عرف ہنی ناڑی محلہ میں کرائے کے گھر میں مقیم تھا کہ نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں ہنی موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔

مانسہرہ پولیس کا کہنا ہے کہ ہنی کو پانچ گولیاں ماری گئیں جس کے نتیجے میں وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا۔ محلے داروں کی اطلاع پر پولیس موقع پر پہنچی اور گولیوں کے خول اور دیگر ضروری شواہد اکٹھے کرنے کے بعد خواجہ سرا کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے کنگ عبداللہ اسپتال منتقل کردیا۔ پولیس نے بتایا کہ نا معلوم افراد کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے جبکہ واقعے سے متعلق مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

ہنی کے قتل کے بعد خواجہ سرا برادری کی جانب سے احتجاج کی کال دے دی گئی ہے اُن کا مطالبہ ہے کہ ہنی کے قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے۔ جب تک قاتل گرفتار نہیں ہوں گے وہ احتجاج ختم نہیں کریں گے۔ خیبر پختونخوا میں خواجہ سرا کے حقوق کے لیے کام کرنے والے تیمور کمال نے ہنی کی موت پر افسوس کا اظہار کیا ہے، انہوں نے بتایا کہ ہنی کو پہلے تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور اس کے بعد گولیاں مار کے قتل کیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس سے قبل جون 2019 میں خیبر پختونخوا کے شہر نوشہرہ میں آفتاب عرف مایا خان نامی خواجہ سرا کو قتل کیا گیا تھا ۔

خیبر پختونخوا میں سرگرم خواجہ سرائوں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیم کا کہنا ہے کہ سال 2015 سے اب تک 64 خواجہ سرائوں کو قتل کیا جاچکا ہے جبکہ متعدد خواجہ سرا فائرنگ کے مختلف واقعات میں زخمی بھی ہوئے ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •