اے حمید سے وابستہ یادیں


اے حمید صاحب سے وابستہ یادوں کا خوشگوار سلسلہ ہمیشہ کچھ نا کچھ تحریر کرنے پے اکساتا ہے۔ لڑکپن میں ان کی کہانیوں سے متاثر ہو کر انہیں متعدد خط لکھے۔ جن میں محبت کے اظہار کے ساتھ ساتھ ان سے معصومانہ سوال بھی پوچھے۔ وہ وقتاً فوقتاً ان خطوط کا جواب بھی دیا کرتے تھے۔ آج انتیس اپریل کو اے حمید صاحب کی برسی پر انہی کے لکھے دو جواب قارئین کی نذر کر رہا ہوں۔

پہلا خط

عزیزم مورس! تمہارا اور سونیا کا دونوں خط مجھے مل گئے تھے۔ تم جب بھی خط لکھتے ہو میں تمہیں جواب دے دیتا ہوں۔ اب بھی دے رہا ہوں۔ میں اپنے نام سے پہلے ”اے“ اس لئے لگاتا ہوں کے میرا اصلی نام عبدالحمید ہے۔ سونیا سے کہنا کے میں اپنی کتابوں میں جو کچھ لکھتا ہوں ان میں زیادہ تر میری آپ بیتی ہوتی ہے۔

میری خداوند سے دعا ہے کہ تم دونوں خوش اور صحت مند رہو۔
دعا گو
اے حمید
لاہور

دوسرا خط

قارئین کرام نوائے وقت کے سنڈے میگزین میں میرے مضامین پڑھ کر جو خطوط ارسال فرماتے ہیں اور میرے مضامین کو پسند فرماتے ہیں میری بعض غلطیوں کی نشاندہی کرتے ہیں اور مجھے اپنے مفید مشوروں سے نوازتے ہیں اس کے لئے میں اپنے محترم قارئین کا تہہ دل سے شکر گزار ہوں۔ جواب طلب امور کے سلسلے میں میں بذریعہ ڈاک جواب دینے کی پوری کوشش کرتا ہوں۔ بعض خطوط ایسے ہوتے ہیں کہ جو اس امر کا تقاضا کرتے ہیں کہ میں اپنے کالم میں درج کر کے ان کے اثرات کو اپنے دوسرے قارئین تک پہنچاؤں۔ تاکہ ہمارا ایک دوسرے سے ذہنی رابط قائم رہے۔

یہ پہلا خط جو اس وقت میرے سامنے ہے اسلام آباد سے محترم نوید صاحب نے تحریر فرمایا ہے۔ لکھتے ہیں۔

محترم اے حمید صاحب! یہ خط میں آپ کو اس لیے لکھ رہا ہوں کہ آپ کو بتاؤں کے میں آپ کی کتابوں اور نوائے وقت میں چھپنے والے آپ کے کالم کا نان سٹاپ قاری ہوں۔ میرے دوست اور دوسرے ساتھی بھی آپ کے کالم پڑھتے ہیں اور آپ کی بہت تعریف کرتے ہیں اور آپ کے بارے میں بہت سوال کرتے ہیں۔ سب سے پہلا سوال میرے کزن سنیل کا ہے وہ جو آپ سے یہ پوچھتے ہیں کہ آپ کپڑے کس طرح کے پہنتے ہیں دوسرا سوال میرا ہے کہ آپ کو پھل کون سا پسند ہے؟ آپ کو سبزی کون سی پسند ہے؟

نوید صاحب! میں آپ کا شکرگزار ہوں کہ آپ نے مجھے خط لکھا۔ عرض یہ ہے کہ پھولوں میں مجھے امرود اور انگور بہت پسند ہیں۔ سبزیوں میں مجھے آلو گوشت پسند ہے۔ خط لکھنے کا ایک بار پھر شکریہ۔


Facebook Comments - Accept Cookies to Enable FB Comments (See Footer).

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments (Email address is not required)
Inline Feedbacks
View all comments