جاتے جاتے اللہ نے راستہ بدل دیا اور راستہ دکھانے کے لیے باجوہ صاحب کو بھیج دیا: پرویز الہی


وزیر اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہیٰ نے کہا ہے کہ ’جاتے جاتے اللہ نے ہمارا راستہ تبدیل کر دیا اور راستہ دکھانے کے لیے باجوہ صاحب کو بھیج دیا۔‘

وزیر اعلیٰ پنجاب یہ بات سابق وزیر اعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر قومی اسمبلی میں ہونے والی ووٹنگ کے پس منظر میں کر رہے تھے۔

نجی ٹی وی چینل ’بول نیوز‘ کے اینکر سمیع ابراہیم کے ساتھ انٹرویو میں پرویز الہیٰ کا کہنا تھا ’میں نے باجوہ صاحب سے بات کی شریفوں (شریف برادران) سے ہمیں یہ خطرات ہیں، ان کا اعتبار نہیں ہے، انھوں نے آپ (باجوہ) کے ساتھ بھی یہی کیا۔ اس پر باجوہ صاحب نے کہا میرے ساتھ جو ہوا وہ چھوڑیں، اپنی بات آپ خود سوچیں، لیکن سوچ کر چلیں۔ آپ (پرویز الہی) کے اور آپ کے دوستوں کے لیے عمران خان والا راستہ زیادہ بہتر ہے۔ ‘

انھوں نے کہا کہ ان کی اور مونس الہی کی نیت یہی تھی کہ تحریک انصاف کے ساتھ چلا جائے۔

اسمبلی توڑنے سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ ’جب میں نے چند ماہ قبل وزارت اعلیٰ حلف لیا تھا تو کہا تھا کہ اگر عمران خان نے کہا تو ایک منٹ نہیں لگاؤں گا، اسمبلی توڑ دوں گا اور اب بھی یہی کہتا ہوں۔ ‘

انھوں نے کہا کہ ہمارا آئندہ کا سیاسی سفر عمران خان کے ساتھ ہی ہو گا۔

عثمان بزدار کو وزیر اعلیٰ پنجاب بنانے کا فیصلہ جہانگیر ترین اور فیض صاحب کا تھا: پرویز الہی

وزیر اعلیٰ پنجاب پرویز الہی نے کہا ہے کہ عثمان بزدار کو پنجاب کی وزارت اعلیٰ دینے میں ’جہانگیر ترین اور فیض صاحب‘ کا کردار تھا مگر بعد میں ان کے مطالبے کے باوجود عثمان بزدار کو اس عہدے سے نہیں ہٹایا گیا۔

ہم نیوز کو دیے انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ ’اگر فیض صاحب پنجاب کی انتظامیہ کے حوالے سے میری کچھ باتیں مان لیتے تو ہمارے چار سال ضائع نہ ہوتے۔ ‘

’مثلاً بزدار صاحب، حالانکہ میں نے ہی اسے آگے کیا، اس کے والد کے ساتھ تعلق تھا۔ ہمارا صوبہ یورپ کے کئی ممالک سے بڑا ہے۔ بدقسمتی سے اس طرح صوبہ نہیں چلتا۔‘

’اس کا نقصان جماعت کو ہوا ہے۔ ‘

پرویز الہی نے عمران خان کے اس بیان کی تردید کی جس میں ان کا دعویٰ تھا کہ جنرل باجوہ نے بطور آرمی چیف ’ڈبل گیم کھیلی۔‘

وہ کہتے ہیں کہ ’عمران خان نے ڈبل گیم کھیلی نہ باجوہ صاحب نے، حالات و واقعات ایسی جگہ پر چھوڑ دیتے ہیں کہ اس وقت آپ کے پاس فیصلے کا راستہ نہیں ہوتا۔ میری نظر میں خان صاحب کا صحیح فیصلہ تھا، میرا اور مونس کا بھی صحیح فیصلہ تھا۔‘

پرویز الہی نے کہا کہ اداروں سے مشاورت ہوئی اور ’ہمیں بتایا گیا کہ (عمران خان کے ساتھ جانا) عزت کا راستہ ہے۔ ‘


Facebook Comments - Accept Cookies to Enable FB Comments (See Footer).

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 27642 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments (Email address is not required)
Inline Feedbacks
View all comments