جاجا ڈاکٹرائن

جاجا ڈاکرائن کے بانی جناب جاجا صاحب کا فون آیا۔ فون کی تفصیل میں جانے سے پہلے میں جاجا صاحب کے بارے میں بتا دوں میری ان سے پہلی ملاقات سڑک پر ہوئی، میں اپنے برادر نسبتی عارف کو اس کے گھر چھوڑنے پہنچا تو ان کی بلڈنگ کے نیچے سڑک پر میرا دوسرا بردار نسبتی بابر کسی موٹر سائیکل سوار کے ساتھ کھڑا باتیں کر رہا تھا جیسے ہی ہم گاڑی سے اتر کر اوپر جانے لگے بابر نے عارف کو آواز دے کر کہا ”عارف، جناب جاجا صاحب“۔

عارف نے اس سے حال احوال لیا۔ اور پوچھا کہ کب فیصل آباد سے کراچی آئے ہو؟ اور آج کل کیا کر رہے ہو؟ جاجا صاحب کی بجائے بابر نے اپنے بھائی کو بتایا کہ یہ تو بڑے عرصے سے ادھر ہی ہیں۔ کیا کر رہے ہو؟ اس کا جواب جاجا صاحب نے خود دیا۔
”پہلے تو وہی فیصل آباد والا کا م کرتا رہا۔ پھر ایک دو دفعہ پکڑا گیا۔

Read more