2018: جو پتے ٹوٹے ڈال سے

فنا کی تیرگی سے کون آفتاب بچ سکا جو نور بانٹتے تھے ماہتاب کیا ہو ئے 2018 گزر گیا لیکن اپنے ساتھ اہلِ دل اور اہلِ عقل و دانش کے کیسے کیسے عہد ساز منارہِ انوار کو سمیٹ کر لے گیا۔ یہ سال تھا کہ سیلِ فنا کہ تھمتا ہی نہ تھا۔ ابھی ایک کا ماتم…

Read more

شیخ السندھ شیخ ایاز

میں نے یہ لقب شیخ ایاز کو اس لئے دیا کہ کہ ان کے دل کی دھڑکنوں کی تال بھٹائی کی وائی کے سر سے بندھی ہے۔ سندھو دریا ان کے لاشعور میں بہتا ہے اور ان کا شعور اس کی لہروں کی طرح وقت کے ساحل پر اپنے ہو نے کی مہر ثبت کر…

Read more