ساٹھا باٹھا مرد اور برقع سے جھانکتی پنڈلی

چھوٹا بچہ بیمار تھا۔ رات بھر سو نہ سکی۔ صبح سویرے مچنے والی ہڑبونگ میں بچوں کو اسکول کے لیے روانہ کیا۔ بیمار بچے کو سینے سے لگائے شوہر کے پیچھے بائیک پر سوار ہو گئی۔ دل بچے کی وجہ سے مضطرب تھا۔ زن سے ایک بائیک قریب آئی۔ ایک ساٹھا باٹھا مرد بڑی فرصت…

Read more

آج بریانی کی خوشبو اچھی نہیں لگ رہی

ماں باپ کے کتنے خواب ہوں گے اپنے بچوں کے حوالے سے۔ جگماتی آنکھوں سے پھوٹتی روشن کرنیں۔ دوران سفر چھوٹی چھوٹی شرارتوں سے لطف اندوز ہوتے گھر والے۔ رات ہوی تو شہر قائد میں پڑاؤ ڈالا۔ گیسٹ روم میں قیام کے بعد رات کے کھانے پر بچوں کی پسند پوچھی گئی ہو گی۔ ہنستے کھیلتے بچوں نے بریانی کی فرمایش کی۔ سب نے مل کے کھائی ہو گی۔ لیکن کسی نے نہ سوچا ہو گا یہ آخری کھانا ثابت ہو گا۔ بیمار بیوی کو ہاسپتال لے جانے والے باپ نے سوچا تک نہ ہو گا کہ معصوم جگر گوشے کیسے تڑپ کر جان دے رہے ہوں گے۔

Read more

روزانہ اپنے بچے کو دس منٹ دیں

میرا پانچ سال کا بیٹا پچھلے چند دن سے اسکول سے واپس آنے کے بعد بہت خاموش سا رہتا، تھوڑا گھبرایا ہوا بھی۔ دانتوں سے ناخن بی کترنے لگا تھا۔ آج میں نے بہت پیار سے پوچھنا چاہی پہلے تو بہت گھبرا سا گیا پھر ہچکچاتے ہوے جو وجہ بتائی میں خاموش سی ہو گئی۔ چھٹی کے وقت رش سا لگا رہنا ایک معمول کا عمل ہے۔ چھوٹے بچے جب تک کوئی لینے نہیں آتا اسکول کے اندر بنے پلے ایریا میں کھیلتے رہتے ہیں۔ بڑی کلاس کا کوئی لڑکا دو دن اسے رانو ں سے چھو کے گزر جاتا۔

Read more

گندے نالے میں تیرتی انسانیت

میں لفظوں کی تمہید کیسے باندھوں۔ کم سن عظمیٰ کا چہرہ میری نظروں سے ہٹ نہیں رہا۔ اس کی نیل و نیل آنکھ الجھے بکھرے بال پچکا ہوا چہرہ سوجن زدہ ہونٹ اس کی بے بسی چیخ چیخ کے بتا رہی ہے کہ اس کے ساتھ کیا جانے والا سلوک کس قدر اندوناک تھا۔ کس…

Read more