ویڈیو کالم: اب مولانا طارق جمیل بھی کپڑے بیچیں گے

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

مولانا طارق جمیل کے متعلق جیسے ہی یہ خبر پھیلی کہ وہ جنید جمشید کے نقش قدم پر چلتے ہوئے ایم ٹی جے کے نام سے فیشن مارکیٹ میں داخل ہو گئے ہیں اور کپڑوں کا کاروبار کرنے لگے ہیں، تو شریکوں کو گویا آگ ہی لگ گئی۔ حالانکہ اس بات پر تو مولانا کی تعریف کی جانی چاہیے کہ بعض دوسرے لوگوں کی طرح انہوں نے مذہب کو کاروبار بنانے کی بجائے کپڑے کو کاروبار بنایا۔ اس کاروبار پر ایسا غل مچا کہ مولانا طارق جمیل کو بیان دینا پڑا کہ ”مولوی کا تصور ہے کہ وہ بھیک مانگتا ہے اور وہ لوگوں سے مانگتا ہے۔ ہم نے کسی کاروباری نیت سے یہ کام نہیں کیا، کسی کے مقابلے میں نہیں کیا۔“

کالم پڑھنے کے لیے اس لنک پر کلک کریں

 

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

عدنان خان کاکڑ

عدنان خان کاکڑ سنجیدہ طنز لکھنا پسند کرتے ہیں۔ کبھی کبھار مزاح پر بھی ہاتھ صاف کر جاتے ہیں۔ شاذ و نادر کوئی ایسی تحریر بھی لکھ جاتے ہیں جس میں ان کے الفاظ کا وہی مطلب ہوتا ہے جو پہلی نظر میں دکھائی دے رہا ہوتا ہے۔

adnan-khan-kakar has 1358 posts and counting.See all posts by adnan-khan-kakar

Leave a Reply