طیارہ حادثہ پر جنوبی کوریا کے وزیراعظم کی ہٹ دھرمی

بائیس مئی، جمعہ کی سہ پہر فلائیٹ پی۔ کے 8303 نے لاہور سے کراچی کے لئے اڑان بھری۔ اور ڈیڑھ گھنٹے بعد کراچی ائرپورٹ پر لینڈنگ کی پہلی کوشش کی۔ لیکن لینڈنگ گیئر کی خرابی اور ٹائر نہ کھل سکنے پر ہدایات کے مطابق طیارہ فضا میں دوبارہ بلند ہوگیا۔ تھوڑی دیر فضا میں چکر کاٹنے کے بعد دوبارہ لینڈنگ کی کوشش میں رن وے سے ڈھائی سو میٹر دور تین منزلہ عمارت سے ٹکرا کر تباہ ہوگیا۔ طیارے میں سوار 97 میں سے دو افراد کے سوا سبھی جاں بحق ہو گئے۔ طیارہ کی زد میں آنے والے پچیس مکانات اور کئی گاڑیاں بھی تباہ ہوگئیں۔ جہاں ہنستے بستے 95 انسان یک لخت بھیانک موت کا شکار ہو گئے۔ وہیں متاثرہ خاندانوں اور پورے ملک کے لئے یہ حادثہ انتہائی اذیت اور غم کا باعث ہے۔

Read more

اجتماعی مدافعت؛ انسان ریوڑ نہیں

وبا کے نقطہ عروج پر پہنچنے میں وقت لگتا ہے۔ بیماری کے پھیلاؤ پر کئی عوامل اثر انداز ہوتے ہیں۔ یہی عوامل وبا کے جلد یا بدیر، آنے والے عروج کا فیصلہ کرتے ہیں۔ چونکہ ابھی تو اس موذی کورونا وائرس سے حضرت انسان کی واقفیت نئی ہے۔ اسی لئے اس کے ناز و انداز کی زیادہ سمجھ بھی نہیں۔ وبائی امراض کے حوالے سے کئی عالمی ادارے بشمول عالمی ادارہ صحت مسلسل نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اور ہر ملک میں وبا کے بدلتے تیور اور مقابلہ کے حوالے سے ہدایات جاری کرتے رہتے ہیں۔

Read more

کورونا سازش: ہم مان گئے، بس جاپان کو منا لیجیے

مجھے اعتراف ہے، کہ میرے ایمان کی کمزوری، ناقص عقل، سامراجی پروپیگنڈا سے مرعوب ہونے کی وجہ ہی تھی کہ جب عالمی ادارہ صحت نے کورونا کو عالمی وبا قرار دیا۔ تو میں نے فوراً یقین کر لیا۔ بس ایک دفعہ گمراہی کے راستے پر چلنے کی دیر تھی پھر مجھے اٹلی، اسپین، فرانس، برطانیہ اور امریکہ میں ہونے والی اموات کا دکھ ہوتا رہا۔ میں نے جھوٹے میڈیا کی خبروں کو سچا سمجھنے کی غلطی کی۔ میں سامراج کی سازش کو نہ سمجھ سکا۔

Read more

ناقابلِ تسخیر ہونے کے زعم میں تباہ ہونے والا ایک شہر

یہ نازی جرمنی کا مشرقی شہر ڈریسڈن ہے۔ دنیا کے خوبصورت ترین شہروں میں سے ایک۔ اسے دریائے البے کے کنارے آباد دوسرا فلورنس بھی کہا جاتا ہے۔ خوبصورت تاریخی عمارات، تھیٹر، عجائب گھر، سیرگاہیں، درسگاہیں، لکڑی سے بنے خوبصورت مکانات اور کشادہ سڑکیں، غرض خوبصورتی کی تمام تر وجوہات شہر میں اکٹھی ہیں۔

یہ دوسری جنگ عظیم کا زمانہ ہے۔ جنگ شروع ہوئے 6 سال کا عرصہ گزر چکا۔ اس سارے عرصے میں اب تک شہر سے باہر اسلحہ کے بڑے کارخانوں اور دیگر فوجی تنصیبات پر، صرف 7 اتحادی فضائی حملے ہوئے ہیں۔ جبکہ شہر کی آبادی ابھی تک حملوں سے محفوظ ہے۔ اس قدر محفوظ کہ شہری آبادی پر فضائی یا زمینی حملہ کا ایک بھی واقعہ گزشتہ چھ سالوں میں نہیں ہوا۔ محاذ کی طرف جانے والے فوجی اور فضا میں اڑتے طیارے، تو دکھائی دیتے رہتے ہیں۔ اور آئے دن فضائی حملے کا خطرہ ریڈیو اور اخبارات کے ذریعے سامنے آتا رہتا ہے۔ چند ماہ سے فضائی حملہ کی اطلاع والے سائرن بجنا ایک معمول ہوچکا ہے۔ لیکن ڈریسڈن کے شہری کبھی تو حملے کی بات کو اپنی نازی حکومت کا پروپیگنڈا اور کبھی اتحادیوں کی گیدڑ بھبکیاں اور کبھی اخبارات کی خانہ پری قرار دے دیتے ہیں۔ یوں خطرے کا الارم بجنا ایک مذاق بن کر رہ گیا ہے۔

Read more

پاکستان کا نظام صحت اس قدر بوجھ کا اہل نہیں

حکومت کی طرف سے لاک ڈاؤن میں نرمی کا فیصلہ ایسے وقت سامنے آیا، جب یومیہ کورونا وائرس کے ایک ہزار مریض سامنے آ رہے تھے۔ جبکہ لاک ڈاؤن کھلنے کے دوسرے ہی دن ایک دن میں دو ہزار مریض سامنے آئے ہیں۔ یاد رہے کہ 2 مارچ کو پاکستان میں کورونا وائرس کے پانچ مریض تھے۔ ایک ماہ بعد یعنی 2 اپریل کو 2450 اور اب 44 دن بعد یہ تعداد 35 ہزار سے زائد ہے۔

حکومت نے صنعتکاروں، تاجروں اور علما سے احتیاطی تدابیر کی فہرستوں پر رضامندی لینا ہی کافی سمجھا ہے۔ جبکہ ہمارے بازار عید کی خریداری کے لئے ایک بار پھر تنگ پڑ گئے ہیں۔

Read more

میں ہوں اطہر شاہ خان جیدی

جی، جی میں ہوں اطہر شاہ خاں۔ اکثر لوگ مجھے ”جیدی“ کہہ کر پکارتے ہیں۔ نہیں، نہیں، مجھے برا نہیں بلکہ بہت اچھا لگتا ہے۔ کہ میری تخلیق اس قدر مقبول ہوئی اور میری پہچان بھی بن گئی۔ پاکستان بننے کے بعد والدین، رام پور اتر پردیش سے لاہور آ بسے۔ میری عمر اس وقت…

Read more

وائرس دشمن بھی، دوست بھی

ان چاہے مہمان اور گھس بیٹھیے سے نفرت سب کو ہوتی ہے، لیکن ایسا ان چاہا مہمان جو میزبانی کے عوض بیماری دے۔ اپنے قیام کو میزبان کی موت تک طوالت دے۔ اور میزبان کا اس قدر نقصان کرے کہ تھوڑی مدت میں میزبان موت کے منہ میں چلا جائے۔ تو یقیناً ایسے مہمان کے…

Read more

سیاہ موت۔ تدبیر سے ہار گئی

یہ تیرہویں صدی عیسوی کا نصف ہے۔ عیسائی یورپ میں کچھ سالوں سے ایشیا و افریقہ میں پھیلنے والی سیاہ موت کے بارے افواہیں گرم ہیں۔ حتیٰ کہ اکتوبر 1347 ء میں سسلی کی بندرگاہ پر بحیرہ آکسین سے آنے والے کچھ بحری جہاز لنگر انداز ہوئے۔ لوگ یہ دیکھ کر حیران ہیں، کہ ان…

Read more

عرفان خان، ایک ضدی خواب گر

ابھی تریپن سال ہی اس کی عمر تھی، اسی لئے جب کینسر سے بیمار ہونے کی خبر آئی۔ تو دنیا بھر میں اس کے چاہنے والے۔ ماننے کو ہی تیار نہیں تھے کہ وہ کینسر کے ہاتھوں دنیا چھوڑ جائے گا۔ لیکن وہ خود مان گیا تھا کہ یہ کینسر کی خبر موت کا بلاوا…

Read more

سمارٹ لاک ڈاؤن دیکھا آپ نے؟

لاک ڈاؤن نہیں کریں گے۔ کیسے کر سکتے ہیں۔ دیکھئے ہمارا سب سے بڑا مسئلہ بھوک ہے۔ لاک ڈاؤن کا کوئی فائدہ نہیں، لوگوں میں بے چینی پھیل گئی تو بہت بڑا نقصان ہوگا۔ ایک ہوتا ہے جزوی لاک ڈاؤن، ایک سخت لاک ڈاؤن اور پھر آتا ہے کرفیو۔ ابھی ہم لاک ڈاؤن کے درجات…

Read more