راولپنڈی میں چودہ ماہ کے بچے کے سامنے ماں کا ریپ، دونوں قتل

ایک تیس سالہ خاتون جو خبروں کے مطابق اپنے چودہ ماہ کے بچے کے سامنے پہلے ریپ کی گئی اور پھر دونوں پر خنجر کے وار کیے گئے، ڈی ایچ کیو ہسپتال میں زندگی کی بازی ہار گئی۔ بچہ ہسپتال لے جاتے ہوئے راستے میں ہی فوت ہو گیا تھا۔

پولیس نے مشتبہ ملزم کے خلاف پرچہ کاٹ دیا ہے اور اس کی تلاش جاری ہے۔

ہفتے کی دوپہر ساڑھے بارہ بجے ایک تیس سالہ خاتون، اس کا بچہ، بھائی اور انکل چک بیلی بازار میں بھیک مانگنے کے لیے پہنچے۔ ایف آئی آر میں خاتون کے بھائی نے لکھوایا کہ انہیں ایک شخص ملا جسے اس کی بہن جانتی تھی۔ اس شخص نے خاتون اور بچے کو موہڑہ گاؤں پہنچانے کی پیش کش کی۔

بھائی کے مطابق جب ایک طویل مدت تک اس کی بہن اور بچہ واپس نہ پہنچے تو اس نے پریشان ہو کر انہیں تلاش کرنا شروع کر دیا اور انہیں موہڑہ کے قریب جنگل میں اس حالت میں پایا کہ دونوں زمین پر پڑے ہوئے تھے اور ان کی گردنوں پر خنجر کے زخم تھے۔

خاتون نے اپنے بھائی کو بتایا کہ اسے ملزم نے ریپ کیا ہے اور اس کے بعد قتل کرنے کی نیت سے اس پر اور بچے پر چاقو کا وار کیا۔

بھائی نے ایک نجی ایمبولنس میں دونوں کو ہسپتال پہنچانے کی کوشش کی مگر راستے میں ہی بچہ فوت ہو گیا۔ اتوار کو خاتون بھی وفات پا گئیں۔

ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق خاتون کی گردن پر کیا گیا وار اس کی موت کی وجہ بنا۔ یہ یقینی طور پر جاننے کے لیے کہ کیا اسے ریپ کیا گیا، مزید فارنزک ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں۔

تفتیشی افسر کے مطابق مقتولہ کا تعلق وہاڑی تھے تھا اور شدید زخمی ہونے کی وجہ سے اس کا بیان ریکارڈ نہیں کیا جا سکا۔

ماں اور شیرخوار بچے کے قتل میں ملوث ملزم گرفتار

انتباہ: آگے زخمی ماں اور مقتول بچے کی تصویر موجودہ ہے۔

کمزور دل خواتین و حضرات دیکھنے سے گریز کریں

 

 

Comments - User is solely responsible for his/her words