پتن منار۔ رحیم یار خان

رحیم یار خان ریلوے اسٹیشن سے 8 کلو میٹر دور دریائے سندھ کے مشرقی دھانے پر ایک خاک اڑاتی عمارت پتن منارہ کے نام سے اپنی مبہم سی شناخت کرواتی ہے۔ یہ تقریباً 2500 سال پرانی بدھ مت کی خانقاہ ہے۔ اس عمارت کے تاریخی حوالے بہت کم دستیاب ہیں مگر اس بات پر ماہرین کا اتفاق ہے کہ یہ تین منزلہ عمارت تھی جو موریان عہد اور وادی ہاکڑہ کی تہذیب میں تعمیر کی گئی۔ متن منارہ کی پہلی منزل کب گری اس حوالے سے کوئی معتبر تاریخی حوالہ موجود نہیں ہے البتہ دوسری منزل 1740 میں مسمار کی گئی۔ اس کے اینٹ پتھر کو دین گڑھ اور ساحل گڑھ کے نئے قلعوں کی تعمیر میں استعمال کیا گیا۔ اس کی کھدائی کے دوران ایک اینٹ دریافت ہوئی جس پر درج شدہ سنسکرت تحریر کے مطابق یہ عبادت گاہ سکندرِ اعظم کے دور میں تعمیر ہوئی۔

Read more

کئی چاند تھے سر آسمان از شمس الرحمن فاروقی

اردو ادب کا دامن ناول نگاری کے حوالے سےزیادہ زرخیز نہیں ہے، جتنے بہترین ناول لکھے گئے ہیں وہ سب انگلیوں پر گنے جا سکتے ہیں۔ اگر اردو کے بہترین ناولوں کی فہرست مرتب کی جائے اس میں شمس الرحمن فاروقی کا ”کئی چاند تھے سر آسمان“ یقیناً پہلے دس ناولوں میں شمار ہو گا۔ اس ناول کا عنوان احمد مشتاق کے شعر سے ماخوذ کیا گیا ہے ؛

Read more

اصلاحی نکات برائے آزاد خواتین

آٹھ مارچ کو خواتین کے عالمی دن پر فیس بک پر قیامت کا شور برپا تھا۔ جس طرف دیکھیں ہر پوسٹ پر مخالفین اور حامیوں کا جمِ غفیر تھا۔ عورتوں نے اپنے رائے یا اظہار مختلف قسم کے بینر اور پلے کارڈ اٹھا کر کیا۔ کچھ انتہائی سادہ اور بنیادی مسائل تھے جن کا خواتین…

Read more

بچوں سے پہلے والدین کی تربیت ضروری ہے

ہم ایسے معاشرے سے تعلق رکھتے ہیں جو بچوں کے لیے قطعی محفوظ نہیں ہے۔ ہم اجنبی ماحول سے تو بچوں کی حفاظت یقینی بنانے کی بھرپور کوشش کرتے ہیں مگر ان قابل اعتبار لوگوں سے بے فکر ہو جاتے ہیں جو اکثر اوقات خطرے کا اصل موجب ہوتے ہیں۔ آج کل کے دور میں بچوں کو جنسی تربیت دینا از حد ضروری ہے مگر اس سے بھی ضروری امر والدین کی اس حوالے سے تربیت ہے۔ ہم بچوں کو یہ تو سمجھا دیتے ہیں کہ اجنبی لوگوں سے محتاط رہنا ہے مگر اس بات کو کیوں نظر انداز کر دیتے ہیں کہ ایک خاص عمر کے بعد بچے کو قریبی رشتے دار کی گود میں بھی نہیں بیٹھنا چاہیے۔

Read more