زندہ انسانوں کی کھال اتار کر دست کاری کے نمونے بنانے والی عورت

زندہ انسانوں کی کھال اتار کر دست کاریاں بنانے والی آئلزے کوخ قیدیوں کی آنکھوں، کانوں، ہاتھوں اور دیگر اعضاء سے ”ہینڈی کرافٹس“ بناکر تحفتاً بانٹتی تھی۔ وہ نعشوں کی ’مُنڈیوں‘ کوکیمیائی عمل سے چھوٹا کر کے بہ طور ٹرافی گھر کی دیواروں پر سجاتی تھی۔ انسانی کھال سے لیمپ شیڈ، پرس، دستانے اور دیگر اشیاء بناکر استعمال کرنا اس کا مشغلہ تھا۔ خاتون جرمن فوجی کی خوں رنگ زندگی کا احوال، جسے دنیا کی ظالم ترین عورت قرار دیاگیا۔
انسانی کھال سے بنی اشیاء آج کئی کمپنیاں آن لائن فروخت کرہی ہیں۔

Read more

مئی :ماؤں کے بچھڑنے کا مہینہ

مئی کے مہینے کو ماؤں سے منسوب کیا گیا ہے۔ اس کے دوسرے ہفتے میں پوری دنیا ماؤں کا عالمی دن مناتی ہے۔ دیکھا جائے تو سال کے سب ہی دن ماؤں کی عظمت کے لئے منانا بھی ناکافی ثابت ہوں گے۔ کیونکہ ماں کے احسانوں کو کسی دن سے منسوب نہیں کیا جا سکتا۔ اگر اولاد ازل سے ابد تک کی عبادت کا اجر بھی ماں پر قربان کرے، تب بھی اس کی ممتا کے ایل پل کا احسان اتارنا بھی ناممکن، قطعی ناممکن ہے۔ اسی لیے کسی ایک مہینے کا ایک دن ماؤں سے منسوب کرنا عقیدت کا بہت ادنیٰ اظہار ہے۔

Read more

نیٹ کا نشہ چھڑانے کے چینی مراکز میں کیا ہوتا ہے؟

چین کے ڈھائی کروڑ نوجوان نیٹ نشے ”وانگ ین“ کے عادی ہوچکے ہیں۔ ہر وقت انٹرنیٹ سے چمٹے رہنے سے وہ ضعف بصارت، ہاضمے کی خرابی و دیگر ذہنی و جسمانی امراض کا شکارہوچکے ہیں۔حکومت نے نیٹ کے نشے میں مبتلا لڑکے، لڑکیوں کے علاج کے لیے خصوصی کیمپ قائم کر لیے۔ نوجوانوں کو دن بھرسخت ورزشیں، مشکل ترین سرگرمیاں کرائی جاتی ہیں، خوراک اور تفریح پر سخت پابندیاں لگائی جاتی ہیں۔نیٹ نشّے کے انسدادی مراکز میں سخت تشدد سے اموات بھی ہو رہی ہیں۔ چین کے علاوہ دوسرے ملکوں میں بھی نیٹ کی لت چھڑانے کے مراکز قائم ہورہے ہیں۔

Read more