عام آدمی کے مسائل

پیر۔ کامل اور مرشد۔ حقیقی کے فیض سے خان صاحب مسند۔ اقتدار پر براجمان ہو ہی گئے۔ جب مرشد کامل ہو تو مُرید کی اُمیدیں ایسے ہی بر آتی ہیں کے دُنیا دنگ رہ جاتی ہے۔ خان صاحب کی ساری سیاست کا آغاز سب کو چور کہنے سے ہوا اور موجودہ اشرافیہ سے بیزار لوگوں کے یہ نعرہ مسلسل اپنی طرف کھینچتا رہا۔ پھر خان صاحب اچانک سے بڑے بڑے جلسے کرنے لگے اور موجودہ اشرافیہ کو اپنا مستقبل ”کشتی ء خان“ میں سوار ہونے میں ہی نظر آیا اور پھر دُنیا نے دیکھا کے وہ سب جن کو خان صاحب چور بُلایا کرتے تھے وہ ”اپنے پُرانے گناہوں“ سے تائب ہوئے بغیر جب خان صاحب کے ساتھ ہو لئے تو مرشد۔ کامل کی نظر۔ کرشمہ ساز کا کمال تھا کے یکایک گنگا نہائے پاک صاف ہوگئے۔

Read more

ڈیم کے معاملے پر سندھ کو سمجھئیے

ہم شاہانہ مزاج کے لوگ ہیں اور یہ ہمارا اجتماعی رویہ بھی ہے، جمہوریت اور جمہوری ادوار کی تعریفیں کرتے ہوئے بھی ہم اجتماعی طور پر جس رویئے کا اظہار کر رہے ہوتے ہیں وہ بنیادی طور پر آمرانہ ہوتا ہے۔ جب ہم ارسطو بن کے دوسروں کو بیوقوف سمجھتے ہوئے اپنے احکامات جاری کر…

Read more

عہد۔ حاضر کے سامری

کہتے ہیں اور سنتے ہیں کہ سامری صاحب بڑے عیار تھے نظروں کے سامنے وہ وہ دھوکے پیدا کر دیتے تھے کہ اچھا خاصہ باشعور بندہ تلملا کے رہ جائے۔ جناب کی دربار۔ شاھی تک بڑی گہری رسائی تھی اور کانا پھوسی بڑی مہارت سے کر لیتے تھے۔ وقت بدل گیا زمانے تبدیل ہوگئے، درباروں…

Read more

خان صاحب کھلونے دینا چھوڑیں

تبدیلی بہت ہی آسانی سے بکنے والا ساز و سامان ہے، اور اس کے خریدار پوری دُنیا میں پھیلے ہوئے ہیں۔ اس نعرے پر جہاں فیصل آباد، اور سیالکوٹ کے لوگ لٹو ہو جاتے ہیں، وہیں حال نیویارک اور واشنگٹن جیسے شہروں میں بسنے والے پڑھے لکھوں کا بھی ہے۔ خان صاحب نے جب یہ…

Read more

خدارا، سندھ کو سمجھنے کی کوشش کریں

آپ کی دانش سدا سے نرالی تھی۔ آپ نے بنگالیوں کا تماشہ بنا دیا۔ یک طرفہ فیصلے پورے پاکستان کو آدھے پاکستان میں تبدیل کر کے ختم ہوئے۔ لیکن آپ کی دانش پھر بھی آپ کو عذر تلاش کرنے میں لگائے رہی کہ آپ کی دانش اور فیصلے تو درست تھے کچھ علاقائی بین الاقوامی…

Read more