عالمی یومِ خواتین اور ہم

1975 ء میں اقوامِ متحدہ نے عالمی یومِ خواتین آٹھ مارچ کو منانے کا اعلان کیا۔ اس سے پہلے جب آٹھ مارچ 1917 ء کو سوویت یونین میں عورتوں کو ووٹ کا حق ملا، تو یہ دن عورتوں کے دن کے طور پر منایا گیا اور دُنیا میں، جس ملک میں بھی سوشلسٹ تحریک موجود تھی، وہاں یہ دن منایا جانے لگا اور بالآخر اقوامِ متحدہ نے یہ دن عالمی یومِ خواتین کے نام کر دیا۔

امریکہ میں عورتوں کوووٹ کا حق 1920 ء میں ملا جب آئین میں انیسویں ترمیم متعارف کروائی گئی اور اس ترمیم کو سوسن بی اینتھونی کے نام پر ”اینتھونی ترمیم“ کا نام دیا گیا۔ ہم جب آج یہ دن مناتے ہیں تو اس کا سب سے بڑا مقصدان عورتوں کے سیاسی اور سماجی حقوق کے لئے اور بالخصوص ووٹ کا حق حاصل کرنے کے لئے کی گئی ایک لمبی جد و جہد کی کو خراجِ تحسین پیش کرنا ہے اور دوسرا اہم مقصدان عورتوں کے لئے آواز اٹھانا ہے، جنہیں اب بھی بنیادی انسانی حقوق حاصل نہیں اور ان پرمحض اس بنا پر ظلم کیا جاتا ہے یا ان سے امتیاز برتا جاتا ہے کہ وہ اس صنف سے تعلق رکھتی ہے۔

Read more

نئے پاکستان میں حج پالیسی اور “باسودے کی مریم”

باسودے کی مریم کسی فردِ واحد کا نام نہیں۔ ہمارے گھروں میں، گلی محلوں میں، جاننے والوں میں، سب کے دل باسودے کی مریم جیسے ہیں۔ ممتاز افسانہ نگار اسد محمد خان کے افسانے ’’باسودے کی مریم‘‘ کو پڑھ کر دل میں جہاں عقیدت و محبت کی لہریں جنم لیتی ہیں، وہیں غربت کی وہ…

Read more