مجھے ضیاء الحق اچھا لگنے لگا ہے

وسعت اللہ خان نے آزادی صحافت کے عنوان سے منعقدہ نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سال بھی لاہور میں فیض فیسٹول میں اسی موضوع پر ہم نے بہت سی باتیں کی تھیں ایک سال گزرنے کے بعد بہت زیادہ فرق محسوس کرتا ہوں۔ البتہ لطائف کی تعداد پچھلے سال کی نسبت بڑھ…

Read more

ندیم رضاسرور کی مرثیہ گوئی کے 40 سال

دھندلاتی یادوں میں بچپن کے محرم کی بہت سی یادوں میں ندیم سرور کا نوحہ ”نہ رو زینب نہ رو“ کا البم ہمیشہ یاد رہتا ہے۔ یوٹیوب تو دور حاضر کی سہولت ہے اس دور میں کیسٹ اور وی سی آر نوحے سننے اور دیکھنے کا سب سے بڑا ذریعہ ہوا کرتے تھے۔ محرم کی…

Read more

ٹرمپ کا ایک اور حربہ ناکام

ایران میں کسی بھی خاص موقع پر جب سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کا خطاب ہوتا ہے تو سٹیج پر عمومی طور پر دو قسم کے بینر ضرور لگائے جاتے ہیں جن پر امام خمینی کا فرمان ”امریکہ ایران کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا“ دوسرے بینر پر ”ہم امریکہ کو پاوں تلے روندتے ہیں“ لکھا ہوتا ہے۔ گزشتہ روز جاپانی وزیر اعظم نے ایران کا دورہ کیا انقلاب اسلامی کے بعد یہ جاپان کے کسی بھی پہلے وزیراعظم کا دورہ تھا اس تاریخی موقع پر ان دونوں فقروں کو عملی طو رپر ثابت کیا گیا ہے۔

Read more

عالمی یوم یتامیٰ :یتیم پرور حضرت علی کی سیرت پر عمل کیجئے اور الخدمت فاونڈیشن کا ساتھ دیجئے

پاکستان میں بیسیوں ملکی اور بین الاقوامی فلاحی ادارے یتیم بچوں کی فلاح و بہبود کے لئے کام کر رہے ہیں۔ پاکستان میں یتیم بچوں کی کفالت کرنے والے چند اداروں نے پاکستان میں یتیم بچوں کی آواز بننے کے لیے پاکستان آرفن کئیر فور م تشکیل دیا جس میں الخدمت فانڈیشن پاکستان سرفہرست ہے۔ یہ فیصلہ کیا گیا کہ پاکستان آرفن کئیر فورمہر سال 15 رمضان کو یوم یتامی کے طور پر منائے گی۔ اور گزشتہ سال پاکستان کی قومی اسمبلی میں بھی، 15 رمضان کو یوم یتامی منانے کی قرار داد متفقہ طور پر منظور کی گئی ہے۔ اسلامی ملکوں کی تنظیم او آئی سی نے دسمبر 2013 میں پہلی بار ترکی کی معروف سماجی تنظیم آئی ایچ ایچ کی تجویز پر تمام اسلامی ملکوں میں 15 رمضان کویتیم بچوں کے دن کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا تھاجسے دنیا بھر میں یتیم بچوں کی کفالت اور فلاح و بہبود کے لئے کام کرنے والے اداروں نے عملاسراہا ہے۔

Read more

صحافت کا روشن مستقبل: موبائل جرنلزم

گزشتہ روزوزیر اطلاعات فواد چودھری نے میڈیا کانفرنس میں ا پنے موقف کو دہراتے ہوئے بتایا کہ صحافیوں کو نئے دور ٹیکنالوجی کے ساتھ ساتھ چلنا ہوگا بدقسمتی ای پی پی نیوز ایجنسی کے 80 فیصد صحافیوں کو اپنا ایمیل چیک کرنا نہیں آتا اگر کسی صحافی کو اپنا ای میل چیک کرنا نہیں آتا…

Read more

پاکستان میں پہلی بار جبری گمشدگی جرم بن گیا لیکن؟

پاکستان میں گزشتہ تین سال سے جبری گمشدگیوں میں اضافہ ہورہا تھا انسانی حقوق کی تنظیموں کی جانب سے اس غیر آئینی قدم کو جرم قرار دینے کا مطالبہ زور پکڑ رہا تھا۔ سیاسی جماعتوں میں پیپلز پارٹی کی جانب سے بارہا اس کو جرم قرار دینے کی عملی اقدامات کیے گئے۔ گزشتہ روز وزیر…

Read more

مجسمہ شیطان کا نہیں قصور کی زینب کے قاتل کے ”وحشی پن“ کا تھا

لاہور کے عجائب گھر کے داخلی راستے پر تعینات سرمئی رنگ کے انسانی اور حیوانی ساخت کے حامل 16 فٹ اونچائی کے مخلوطی مجسمے کو عوامی احتجاج اور ہائیکورٹ کے حکم پر ہٹا دیا گیا۔ اس مجسمے کو سوشل میڈیا پر ’الومناٹی‘ ، ’ڈرٹو‘ یا ’شیطانیت‘ کے تصور کے ساتھ تشبیہ بھی دی گئی مجسمہ لاہور میں فنون لطیفہ کے ایک طالب علم ارتباط الحسن چیمہ کی تخلیق ہے اس کی قدامت 16 فٹ ہے اور فائبرگلاس سے تیاری میں اس پر پانچ ماہ صرف ہوئے۔

یہ مجسمہ ان کی گریجویشن کا فائنل تھیسز ورک تھاحال ہی میں پنجاب یونیورسٹی کے کالج آف آرٹس اینڈ ڈیزئن سے گریجویشن مکمل کرنے والے مجسمہ ساز ارتباط الحسن بتایا کہ میں آرٹ کا نہیں سائنس کا طالبعلم تھا تاہم آرٹ میں میری دلچسپی خاصی زیادہ تھی بالخصوص مجسمہ سازی کی طرف رجحان زیادہ تھا۔ فائن آرٹس اور مجسمہ سازی کے فن کو سیکھنے سے بے پناہ محبت تھی۔ پہلے پنجاب یونیورسٹی میں آئی ٹی کی تعلیم حاصل کی لیکن رغبت کی وجہ سے مجسمہ سازی کی طرف آیا اور آرٹ کی تعلیم مکمل کی۔

Read more

کیا سانحہ ساہیوال کا فیصلہ فوجی عدالت میں ہوگا؟

آپریشن ضرب عضب کے باوجود پشاور میں آرمی پبلک سکول پر حملے میں ایک سو تیس سے زیادہ بچوں کے قتل نے ریاستی کمزوریوں کو نمایاں کیا تو حکومت نے عدالتی نظام میں سست روی کا جواز دیتے ہوئے انتہا پسندی سے متعلق مقدمات سے بروقت نمٹنے کے لیے فوجی عدالتیں قائم کیں۔ فوجی عدالتیں جنوری 2015 میں دو سال کے لئے قائم کی گئی تھیں تاہم 2017 میں دو سال توسیع کی گئی جس کی آئینی مدت 7 جنورری 2019 میں ختم ہوگئی ہے۔ چار سال قبل وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے ملٹری کورٹس کے قیام پہ اراکین پارلیمنٹ کو اعتماد میں لیتے ہوئے بتایا تھا کہ یہ غیر معمولی حالت اور محدود وقت کے لیے ہے کچھ سیاسی جماعتیں فوجی عدالتوں کے قیام کے خلاف تھیں پیپلز پارٹی کے رہنما قمرالزماں کائرہ نے موقف اختیار کیا تھا کہ ایسے تمام قوانین پیپلز پارٹی کی قیادت اور کارکنوں کے خلاف بہت استعمال ہوئے۔

Read more

منٹو کو پڑھئے سر پہ سوار نہ کیجئے

منٹوزندہ تھا تو ترقی پسند ہی بڑ ے مخالف تھے۔ آج لاہور پریس کلب کے سامنے ترقی پسندوں نے مظاہرہ کیا کہ منٹو فلم اور ڈراموں پہ پابندی ہٹائی جائے۔ انڈیا کی نئی منٹوفلم میں دیکھیں تو ترقی پسند والے منٹو کے افسانوں کے خلاف گواہیوں میں عدالت میں فیض احمد فیض جیسے معتبر پیش…

Read more

کھویا ہوا سامان کہاں تلاش کریں؟

گلی محلے میں کوئی شخص گم ہوجائے تو ملنا محال ہوجاتا ہے پہلے اعلان کروایا جاتا ہے اگر اس کا ذہنی توازن درست نہیں ہے تو اشتہار لگادیا جاتا ہے جس میں قمیض کا رنگ اور عمر کے ساتھ موبائل نمبر درج ہوتا ہے ایسے عمل سے ملنے والا آسانی سے رابطہ کرسکتے ہیں۔ البتہ جو شخص اپنے ایکٹو ازم کے باعث گمشدہ لسٹ میں شامل ہوجائے تو کچھ عرصہ بعد مل جاتا ہے اور ورثاءکو معلوم ہوتا ہے ان کا پیارا کہاں پہ ہوگا۔ لیکن اگر آپ ایک شہر سے دوسرے شہر سفر کرتے ہیں اور آپ کے ہمراہ کوئی قیمتی فائل دستاویزات ہیں اور ایسی پریشان کن صورتحال ہے کہ شناختی کارڈ کی طرح اس میں کوئی چپ بھی چسپاں نہیں ہے تو ایسی چیزوں کو ملنا محال ہوجاتا ہے۔

Read more